سعودی عرب نے تیل تنصیبات پر حملے کی تحقیقات میں بین الاقوامی ماہرین کو دی دعوت

سعودی وزارت خارجہ نے کہا’’ تفتیش جاری ہے اور زمینی حقائق کو قریب سے پرکھنے اور تحقیقات میں شامل ہونے کے لئے ہم نے اقوام ​​متحدہ اور بین الاقوامی ماہرین کو دعوت دی ہے‘‘۔

Sep 17, 2019 11:16 AM IST | Updated on: Sep 17, 2019 11:59 AM IST
سعودی عرب نے تیل تنصیبات پر حملے کی تحقیقات میں بین الاقوامی ماہرین کو دی دعوت

ہفتہ کے روز سعودی عرب کے مشرقی شہر عبقیق میں آرامکو سہولت میں آگ کے بعد اٹھتا ہوا دھواں۔ (رائٹرز)۔

دوحہ۔ سعودی عرب نے حال ہی میں آرامكو تیل تنصیبات پر حملے کی تحقیقات میں شمولیت کے لئے بین الاقوامی اور اقوام متحدہ کے ماہرین کو دعوت دی ہے۔ سعودی وزارت خارجہ نے کہا’’ تفتیش جاری ہے اور زمینی حقائق کو قریب سے پرکھنے اور تحقیقات میں شامل ہونے کے لئے ہم نے اقوام ​​متحدہ اور بین الاقوامی ماہرین کو دعوت دی ہے‘‘۔ انہوں نے بین الاقوامی برادری سے عالمی معیشت کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف سخت اور واضح موقف اپنانے کی بھی اپیل کی ہے۔

قابل غور ہے کہ ہفتہ کو سعودی عرب کی دو پٹرولیم کمپنیوں پر ڈرون سے حملہ کیا گیا تھا۔ سعودی عرب دراصل حوثی باغیوں کے خلاف جنگ میں یمن کو فضائی حدود میں مدد مہیا کرا رہا ہے جس کے سبب سمجھا جا رہا تھا کہ یہ حملہ حوثی باغیوں نے کیا ہے۔ امریکی حکام نے اس کے پیچھے ایران کا ہاتھ ہونے کی بات کہی تھی لیکن ایران نے امریکہ کے اس الزام کو مسترد کردیا ہے۔

Loading...

Loading...