ہوم » نیوز » عالمی منظر

یمن: حوثی باغیوں کے زیر کنٹرول صنعا پر سعودی فوجی اتحاد کے فضائی حملے

ایک طرف دنیا میں جہاں لوگ کورونا وائرس جیسے خوفناک اور جان لیوا وبا سے دوچار ہیں وہیں سعودی فوجی اتحاد نے یمن کے باغیوں کے زیر قبضہ دارالحکومت میں فضائی حملے کئے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 31, 2020 01:19 PM IST
  • Share this:
یمن: حوثی باغیوں کے زیر کنٹرول صنعا پر سعودی فوجی اتحاد کے فضائی حملے
فائل فوٹو

صنعا۔ ایک طرف دنیا میں جہاں لوگ کورونا وائرس جیسے خوفناک اور جان لیوا وبا سے دوچار ہیں وہیں سعودی فوجی اتحاد نے یمن کے باغیوں کے زیر قبضہ دارالحکومت میں فضائی حملے کئے ہیں۔ اس سے دو روز قبل حوثی باغیوں نے ناکام ڈرون اور میزائل حملہ کر کے سعودی دارالحکومت ریاض کو نشانہ بنایا تھا۔ مقامی افراد کے مطابق صدارتی محل، ایک فوجی اسکول اور صنعا ایئرپورٹ کے قریب ایک ایئر بس کو نشانہ بنایا گیا اور شہر بھر میں بہت زوردار دھماکہ سنا گیا۔ عالمی میڈیا میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق حوثی باغیوں کے نشریاتی چینل المسیرہ نیوز نے کہا کہ فوجی اسکول پر کیے گئے فضائی حملے سے 70 گھوڑے ہلاک جبکہ 30 زخمی ہوگئے۔


خیال رہے کہ گزشتہ برس ستمبر میں سعودی عرب کے حوثی تحریک کے ساتھ مذاکرات ہوئے تھے جس کے بعد سے صنعا شہر میں بمباری انتہائی کم ہوگئی تھی۔ قبل ازیں جمعرات کو ہی دونوں متحارب فریقین نے کورونا وائرس کے پھیلاو کے پیش نظر اقوامِ متحدہ کی جانب سے فوری جنگ بندی کے مطالبہ کا خیر مقدم کیا تھا۔ تاہم گزشتہ ماہ سعودی اتحاد کی جانب سے متعدد گاووں اور قصبوں میں فضائی حملوں کے بعد الجوف اور مارب صوبوں میں دوباہ شدید لڑائی شروع ہو گئی تھی۔


یاد رہے کہ سعودی فوجی اتحاد کی ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں سے مارچ 2015 سے لڑائی جاری ہے۔ فوجی اتحاد کے حکام نے ایک تفصیلی بیان میں کہا کہ انہوں نے باغیوں کے زیر قبضہ فوجی اہداف کو تباہ کرنے کے لیے کارروائی کا آغاز کیا ہے تاہم انہوں نے مزید وضاحت نہیں کی۔ حکام کا کہنا تھا کہ باغیوں کے زیر اثر صنعا میں 12 سے زائد فضائی حملے کئے گئے جس میں دارالحکومت کے شمال میں ایک فوجی اکیڈمی پر 6 حملے اور صنعا کے انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے اندر ایک فوجی ایئر بیس پر 4 حملے شامل ہیں۔ اس کے علاوہ شمال مشرقی صوبہ ارمان میں بھی فضائی حملے رپورٹ ہوئے۔


اس سے قبل سعودی عرب کی فضائی دفاعی افواج نے ہفتے کے روز دارالحکومت ریاض پر رات گئے فائر کئے گئے میزائل روک کر انہیں تباہ کردیا تھا۔ دوسری جانب فوجی حکام اور قبائلی رہنماوں نے بتایا کہ یمن کی حکومتی فورسز اور باغیوں کے درمیان الجوف اور مارب میں ہونے والی جھڑپوں کے نتیجے میں گزشتہ 2 روز کے دوران دونوں اطراف سے 45 سے زائد جنگجو مارے جاچکے ہیں۔ دوسری جانب سرکاری حکام کا کہنا تھا کہ حوثیوں نے صوبہ مارب میں صرواح کا کنٹرول حاصل کرنے کی کوشش کی تھی لیکن حکومتی فورسز نے سعودی اتحاد کے فضائی حملوں کے تعاون سے حوثی باغیوں کے حملے کو پسپا کردیا۔ ادھر یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی مندوب مارٹن گرفتھس نے مارب میں لڑائی میں شدت آنے اور باغیوں کے سعودی عرب پر حملوں پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔
First published: Mar 31, 2020 01:19 PM IST