ہوم » نیوز » عالمی منظر

سعودی شہزادہ الولید بن طلال اپنی جلد رہائی کو لے کر پرامید

گرفتار شہزادہ نے الولید بن طلال نے کہا ہے کہ انہوں نے کچھ بھی غلط نہیں کیا اور انہیں امید ہے کہ ان کی مشکلات جلد ہی ختم ہو جائیں گی۔

  • News18.com
  • Last Updated: Jan 27, 2018 04:49 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سعودی شہزادہ الولید بن طلال اپنی جلد رہائی کو لے کر پرامید
سعودی عرب کے ارب پتی شہزادے الولید بن طلال: فائل فوٹو۔

ریاض۔ سعودی عرب کے ارب پتی شہزادہ الولید بن طلال جنہیں گزشتہ برس مملکت میں شروع کی گئی انسداد بدعنوانی مہم کے تحت دو سو سے زائد شہزادوں، وزرا اور اعلیٰ حکام کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا، نے امید ظاہر کی ہے کہ وہ جلد ہی رہا کر دئیے جائیں گے۔ شہزادہ نے کہا کہ انہوں نے کچھ بھی غلط نہیں کیا اور انہیں امید ہے کہ ان کی مشکلات جلد ہی ختم ہو جائیں گی۔ دارالحکومت ریاض کے معروف رٹز کارلٹن ہوٹل میں مقید پرنس الولید بن طلال نے نیوز ایجسنی رائٹرز کو دئیے اپنے ایک خصوصی انٹرویو میں کہا ہے کہ اُن کی مشکلات جلد ختم ہو جائیں گی اور وہ اگلے چند ایام کے بعد رہائی حاصل کر سکیں گے۔


اپنی گرفتاری کے بعد سے پہلی بار انٹرویو دینے والے شہزادہ طلال نے کہا کہ اُن کو قید کیا جانا یقینی طور پر کسی غلط فہمی کا نتیجہ ہو سکتا ہے۔ انہوں نے اپنے انٹرویو میں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے اصلاحاتی اقدامات کی حمایت اور تعریف بھی کی۔ انٹرویو میں انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اُن پر کوئی الزامات عائد نہیں کیے گئے ہیں اور صرف پوچھ گچھ جاری ہے اور یہ سلسلہ جلد ختم ہو جائے گا۔


واضح رہے کہ طلال سعودی عرب کے اندر خواتین کے حقوق کے زبردست حامی ہیں اوروہ  اُن کو ملازمتیں دینے کی بھی حمایت کرتے ہیں۔

First published: Jan 27, 2018 04:45 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading