ہوم » نیوز » عالمی منظر

اسرائیل سے دوستی کے معاملے پر شہزادہ محمد بن سلمان کے خلاف گئے شہزادہ فیصل، شدید تنقید کی

سعودی کے خفیہ محکمے کی دو دہائی سے بھی زیادہ وقت تک کمان سنبھال چکے اور امریکہ اور برطانیہ میں سفیر رہ چکے شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا کہ اسرائیل نے سیکورٹی سے متعلق الزامات میں نوجوانوں، بزرگوں، خواتین اور مردوں (فلسطینیوں) کو کیمپوں میں قید کر رکھا ہے جو وہاں بغیر انصاف کے ہیں۔ وہ اپنی مرضی سے گھروں کو منہدم کر رہے ہیں اور اپنی مرضی سے لوگوں کو مار رہے ہیں۔

  • Share this:
اسرائیل سے دوستی کے معاملے پر شہزادہ محمد بن سلمان کے خلاف گئے شہزادہ فیصل، شدید تنقید کی
شہزادہ محمد بن سلمان کی فائل فوٹو: فوٹو اے ایف پی

ریاض۔ سعودی عرب ( Saudi Arabia) کے ساتھ اسرائیل (Israel) کے رشتے معمول ہونے کی امیدوں کے درمیان اس معاملہ پر شاہی کنبے میں ہی اختلاف نظر آ رہا ہے۔ ایک طرف تو سعودی عرب کے شہزادے اور ولی عہد محمد بن سلمان (Crown Prince Bin Salman) کی طرف سے اسرائیل۔ سعودی عرب کی بات چیت کو آگے بڑھانے پر مثبت ماحول دیکھنے کو ملا ہے تو وہیں سعودی عرب کے ایک دیگر طاقتور شہزادے ترکی الفیصل (Prince Turki bin Faisal Al Saud) نے بحرین اجلاس میں اسرائیل کی شدید تنقید کی ہے۔


شہزادہ الفیصل نے اسرائیل کو مغربی نوآبادیاتی تک قرار دے دیا جس کے بعد دونوں ملکوں میں پھر سے کشیدگی بڑھتی نظر آ رہی ہے۔ بتا دیں کہ 1948 میں اسرائیل کے قیام کے بعد سے آج تک سعودی عرب نے اسے تسلیم نہیں کیا ہے۔ سعودی کے خفیہ محکمے کی دو دہائی سے بھی زیادہ وقت تک کمان سنبھال چکے اور امریکہ اور برطانیہ میں سفیر رہ چکے شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا کہ اسرائیل نے سیکورٹی سے متعلق الزامات میں نوجوانوں، بزرگوں، خواتین اور مردوں (فلسطینیوں) کو کیمپوں میں قید کر رکھا ہے جو وہاں بغیر انصاف کے ہیں۔ وہ اپنی مرضی سے گھروں کو منہدم کر رہے ہیں اور اپنی مرضی سے لوگوں کو مار رہے ہیں۔


کسی سرکاری عہدے پر نہیں ہیں شہزادہ الفیصل


شہزادہ ترکی الفیصل حال میں کسی سرکاری عہدے پر نہیں ہیں لیکن ان کا رخ شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سے کافی ملتا دیکھا جا رہا ہے۔ وہیں، اس کے ٹھیک برعکس سعودی عرب کے شہزادے محمد بن سلمان نے ایسے اشارے دئیے ہیں کہ وہ ملک میں غیر ملکی سرمایہ کاری کو فروغ دینے اور دونوں ملکوں کے مشترکہ دشمن ایران سے نمٹنے کے لئے اسرائیل کے ساتھ کام کرنے کے خواہش مند ہیں۔

اجلاس میں موجود اسرائیل کے وزیر خارجہ نے شہزادہ الفیصل کے خطاب کے بعد کہا کہ ' میں سعودی نمائندے کے بیانات پر اظہار افسوس کرنا چاہتا ہوں۔ مجھے نہیں لگتا کہ ان کے بیانات مشرق وسطیٰ میں ہو رہیں تبدیلیوں کو ظاہر کرتے ہیں'۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Dec 07, 2020 05:32 PM IST