உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سعودی میں خاتون ٹی وی پریزنٹر کے ’ ناشائستہ‘ کپڑے پر ہنگامہ، جانچ کا حکم

    ٹی وی پریزنٹر شیرین الریفی کی تصویر

    ٹی وی پریزنٹر شیرین الریفی کی تصویر

    سعودی حکام نے ایک خاتون ٹی وی پریزنٹر کے خلاف جانچ شروع کر دی ہے۔ خاتون پر الزام ہے کہ اس نے رپورٹنگ کے دوران ’ ناشائستہ‘ کپڑے پہن رکھے تھے۔

    • Share this:
      سعودی حکام نے ایک خاتون ٹی وی پریزنٹر کے خلاف جانچ شروع کر دی ہے۔ خاتون پر الزام ہے کہ اس نے رپورٹنگ کے دوران ’ ناشائستہ‘ کپڑے پہن رکھے تھے۔ شیرین الریفی نامی پریزنٹر دبئی کے ال ان ٹی وی کے ساتھ کام کرتی ہے۔ شیرین کا ایک ویڈیو وائرل ہوا ہے جس میں انہوں نے لوز ہیڈ اسکارف اور ہلکا کھلا گاون پہنا تھا جس سے ان کا بلاوز اور ٹراوزر نظر آ رہے تھے۔

      اس کلپ کے وائرل ہونے کے بعد لوگوں نے سوشل میڈیا پر عربی ہیش ٹیگ’ ریاض میں برہنہ خاتون ڈرائیونگ کر رہی ہے‘ یوز کر تنقید کی۔ ملک کے آڈیو ویژول میڈیا کی جنرل اتھارٹی نے منگل کے روز کہا کہ الریفی پر الزام ہے کہ انہوں نے ضابطوں اور ہدایات کی خلاف ورزی کی اور’ ناشائستہ لباس‘ پہن رکھا تھا۔

      تاہم الریفی نے ان الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔ ایک مقامی نیوز ویب سائٹ کے مطابق، تنازعہ بڑھنے کے بعد شیرین ملک سے باہر چلی گئی ہیں۔ خیال رہے کہ حال ہی میں خواتین کی ڈرائیونگ پر عائد پابندی ہٹا لی گئی ہے جس کے بعد خواتین نے سڑکوں پر اتر کر اس کا جشن منایا تھا۔
      First published: