உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بچے کی ماں نے سوشل میڈیا پر دیکھ لیا خاتون ٹیچر کا حیران کرنے والا ویڈیو، وائرل ہوتے ہی چلی گئی نوکری

     اکثر سوشل میڈیا پر ایسی چیزیں دیکھنے کو مل جاتی ہیں جو چھوٹے بچوں کے لیے دیکھنے کے لائق  نہیں ہوتیں۔   دراصل خاتون نے انسٹاگرام پر  اسٹرپ کرتے ہوئے ویڈیو شیئر کی تھی ۔ یہ ویڈیو بہت تیزی سے وائرل ہوا اور اس کے اسکول کے طلباء نے وہ ویڈیو دیکھ لیا۔

    اکثر سوشل میڈیا پر ایسی چیزیں دیکھنے کو مل جاتی ہیں جو چھوٹے بچوں کے لیے دیکھنے کے لائق نہیں ہوتیں۔ دراصل خاتون نے انسٹاگرام پر اسٹرپ کرتے ہوئے ویڈیو شیئر کی تھی ۔ یہ ویڈیو بہت تیزی سے وائرل ہوا اور اس کے اسکول کے طلباء نے وہ ویڈیو دیکھ لیا۔

    اکثر سوشل میڈیا پر ایسی چیزیں دیکھنے کو مل جاتی ہیں جو چھوٹے بچوں کے لیے دیکھنے کے لائق نہیں ہوتیں۔ دراصل خاتون نے انسٹاگرام پر اسٹرپ کرتے ہوئے ویڈیو شیئر کی تھی ۔ یہ ویڈیو بہت تیزی سے وائرل ہوا اور اس کے اسکول کے طلباء نے وہ ویڈیو دیکھ لیا۔

    • Share this:
      آج کے دور میں سوشل میڈیا کچھ لوگوں کے لیے تفریح ​​کا ذریعہ بن گیا ہے تو کچھ کے لیے یہ ملک اور دنیا سے باخبر رہنے کا ذریعہ ہے۔ لیکن پھر بھی یہ بچوں کے لیے خطرناک ہے کیونکہ اکثر سوشل میڈیا پر ایسی چیزیں دیکھنے کو مل جاتی ہیں جو چھوٹے بچوں کے لیے دیکھنے کے لائق  نہیں ہوتیں۔ کئی بار چونکا دینے والی ویڈیوز اور تصاویر دیکھنے کو مل جاتی ہیں جن کا بچوں کے ذہن پر برا اثر پڑتا ہے لیکن کچھ اسکول کے بچوں (School Students saw strip tease video of teacher)  نے حال ہی میں سوشل میڈیا پر کچھ ایسا دیکھا جس کے بعد ان کے ہوش ہی اڑ گئے۔ انہوں نے انسٹاگرام پر اپنی ہی ٹیچر کی ایک فحش ویڈیو  (Students saw Erotic Video of Female Teacher) دیکھی لی۔

      وکٹوریہ کاشیرینا  (Viktoria Kashirina) نامی 23 سالہ روسی اسکول ٹیچر نے حال ہی میں سوشل میڈیا پر ایسی ویڈیو پوسٹ کر دی تھیں کہ وہ دیکھتے ہی دیکھتے وائرل ہوگئیں لیکن وائرل ہونے سے بھی بدتر چیز  یہ تھی۔ دراصل خاتون نے انسٹاگرام پر  اسٹرپ کرتے ہوئے ویڈیو شیئر کی تھی ۔ یہ ویڈیو بہت تیزی سے وائرل ہوا اور اس کے اسکول کے طلباء نے وہ ویڈیو دیکھ لیا۔

      بچوں نے دیکھ لی  ٹیچر کی فحش ویڈیو۔۔۔
      رپورٹس کے مطابق وکٹوریہ ادب literature کے مضمون میں بطور ٹرینی ٹیچر کا کام کرتی تھیں اور اسے 11 سے 12 سال کے بچوں کو literature پڑھانا پڑتا تھا۔ لیکن اسی دوران ایک طالب علم کی والدہ نے ٹیچر کی ویڈیو دیکھی جو اس کے بچے کے انسٹاگرام پر جڑی ہوئی  تھی۔ اسکول میں شکایت کرتے ہوئے خاتون نے کہا کہ یا تو ٹیچر کو ایسی فحش ویڈیوز پوسٹ کرنا بند کر دینا چاہیے یا پھر وہ سوشل میڈیا سے دور ہو جائیں کیونکہ اس سے بچوں پر برا اثر پڑ رہا ہے۔

      اسکول نے ٹیچر کو نکال دیا۔
      حالانکہ وکٹوریہ اس سے متفق نہیں تھیں۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ والدین کو چاہیے کہ وہ اپنے بچوں کی ویڈیوز کے بجائے ان کی براؤزنگ ہسٹری دیکھیں۔ وہ کافی وقت سے پول ڈانس کرتے ہوئے ویڈیوز بناتی ہیں اور سوشل میڈیا پر پوسٹ کرتی ہیں۔ خاتون کا کہنا تھا کہ وہ اپنی آزادی اظہار رائے کا استعمال کر رہی ہیں اور ایک ٹیچر ہونے کے باوجود وہ ویڈیوز بنانا بند نہیں کریں گی۔ لیکن شاید اسکول نے یہ بات منظور نہیں کی۔ خاتون کی اس حرکت کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے اسکول  نے انہیں نوکری سے نکال دیا۔ اب وکٹوریہ نے اپنی ملازمت کے حوالے سے عدالت جانے کا فیصلہ کیا ہے اور وہ اسکول کے اس اصول کے خلاف مقدمہ دائر کرنے جارہی ہیں۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: