உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان زندہ باد کالر ٹیون لگائیں افسران، بلوچستان حکومت کا عجیب و غریب فرمان

    حکومت بلوچستان (Balochistan Government) کے ہیومن ریسورس ڈیپارٹمنٹ نے 29 ستمبر 2021 کو یہ ہدایات جاری کیں۔

    حکومت بلوچستان (Balochistan Government) کے ہیومن ریسورس ڈیپارٹمنٹ نے 29 ستمبر 2021 کو یہ ہدایات جاری کیں۔

    ریاست بلوچستان کے تمام ملازمین کے لیے یہ کالر ٹیون لگانا لازمی ہوگا۔ اس کے لیے کسی بھی کمپنی کی سم استعمال کرنے والے ملازمین کو ان نمبروں پر میسج کرنا چاہیے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      اسلام آباد۔ صوبہ بلوچستان (Balochistan Government) میں سرکاری عہدیداروں کو پاکستان سے وفاداری ظاہر کرنے کے لیے عجیب و غریب ہدایات دی جا رہی ہیں۔ بلوچستان حکومت نے اپنے عہدیداروں سے کہا ہے کہ وہ ’پاکستان زندہ باد‘ ( pakistan zindabad callertune) کی کالر ٹیون لگائیں۔ جاری کردہ ہدایات میں اس کالر ٹیون کو انسٹال کرنے کا طریقہ بھی بتایا گیا ہے۔

      حکومت بلوچستان (Balochistan Government) کے ہیومن ریسورس ڈیپارٹمنٹ نے 29 ستمبر 2021 کو یہ ہدایات جاری کیں۔ اس میں کہا گیا کہ ریاست کے چیف سیکریٹری سائنس اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ منعقدہ میٹنگ میں پاکستان زندہ باد کالر ٹیون انسٹال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ریاست بلوچستان کے تمام ملازمین کے لیے یہ کالر ٹیون لگانا لازمی ہوگا۔ اس کے لیے کسی بھی کمپنی کی سم استعمال کرنے والے ملازمین کو ان نمبروں پر میسج کرنا چاہیے۔

      کیوں خوفزدہ ہے پاکستان ؟
      بلوچستان میں باغیوں کے حملوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ چند روز قبل دارالحکومت کوئٹہ میں ایک پولیس چوکی کو نشانہ بناتے ہوئے خودکش حملہ کیا گیا تھا۔ اس حملے میں کئی پولیس اہلکاروں کے علاوہ سات افراد ہلاک ہوئے تھے۔ سیرینا ہوٹل کے باہر دو حملے ہوئے ہیں۔ پاکستان حکومت چاہ کر بھیبلوچستان میں ہونے والے حملوں کو روک نہیں پا رہی ہے۔ ایسے میں وہ اب اس ریاست کے لوگوں کو حب الوطنی کا سبق سکھانے کی کوشش کر رہا ہے۔

      بلوچستان کی سیاسی صورتحال پاکستان کے لیے اہم
      آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ بلوچستان پاکستان کا سب سے اہم سیاسی صوبہ ہے۔ بلوچستان جو کہ پاکستان کے بڑے صوبوں میں سے ایک ہے ، اس کی سرحدیں افغانستان اور ایران سے ملتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کراچی بھی ان لوگوں کی زد میں ہے۔ چین پاکستان اکنامک کوریڈور کا ایک بڑا حصہ اس صوبے سے گزرتا ہے۔ بلوچوں کا گوادر بندرگاہ پر بھی کنٹرول تھا جسے پاکستان نے اب چین کے حوالے کر دیا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: