உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    چین نے پار کیں بے حیائی کی ساری حدیں، اولمپک کھلاڑیوں کے پرائیویٹ پارٹ سے لیاCoronavirus Test کا نمونہ

    خبر ہے کہ بیجنگ سرمائی اولمپکس (Winter Olympics) سے قبل چین کورونا ٹیسٹ کے لیے کھلاڑیوں کے پرائیویٹ پارٹس سے نمونے لے رہا ہے۔ گزشتہ سال بھی، چین کے ذریعے اینل سویب ٹیسٹ کرنا بھی تنازعہ میں رہا تھا۔

    خبر ہے کہ بیجنگ سرمائی اولمپکس (Winter Olympics) سے قبل چین کورونا ٹیسٹ کے لیے کھلاڑیوں کے پرائیویٹ پارٹس سے نمونے لے رہا ہے۔ گزشتہ سال بھی، چین کے ذریعے اینل سویب ٹیسٹ کرنا بھی تنازعہ میں رہا تھا۔

    خبر ہے کہ بیجنگ سرمائی اولمپکس (Winter Olympics) سے قبل چین کورونا ٹیسٹ کے لیے کھلاڑیوں کے پرائیویٹ پارٹس سے نمونے لے رہا ہے۔ گزشتہ سال بھی، چین کے ذریعے اینل سویب ٹیسٹ کرنا بھی تنازعہ میں رہا تھا۔

    • Share this:
      چین کو دنیا میں کورونا وائرس (CoronaVirus) پھیلانے کا ذمہ دار ٹھہرایا جا رہا ہے۔ شروع سے ہی اس وائرس کا الزام چین پر لگایا جا رہا ہے۔ خواہ یہ ملک اس سے متفق نہ ہو لیکن چین کو ہی اس کیلئے ذمہ دار بتایا جاتا رہا ہے۔ کورونا ایک ایسا وائرس ہے جس نے پچھلے دو سالوں سے لوگوں کو تباہ و برباد کر رکھا ہے۔ ویکسین کے باوجود اس کا انفیکشن تھمنے کا نام نہیں لے رہا۔ ڈیلٹا کے بعد اب اس کا اومیکرون ویرینئٹ (Omicron Variant) لوگوں کو تباہ کر رہا ہے۔ چین میں بھی حالیہ دنوں میں کورونا کے کیسز میں اضافہ ہوا ہے۔ دریں اثنا، اس ملک میں دو ہفتوں کے اندر سرمائی اولمپکس کا انعقاد ہونا ہے۔ اس حوالے سے ایک شرمناک خبر سامنے آ رہی ہے۔

      خبر ہے کہ بیجنگ سرمائی اولمپکس (Winter Olympics) سے قبل چین کورونا ٹیسٹ کے لیے کھلاڑیوں کے پرائیویٹ پارٹس سے نمونے لے رہا ہے۔ گزشتہ سال بھی، چین کے ذریعے اینل سویب ٹیسٹ کرنا بھی تنازعہ میں رہا تھا۔ اب اولمپکس (Winter Olympics) کا حصہ بننے کے لیے آنے والے کھلاڑیوں کو اس متنازعہ کووڈ ٹیسٹ سے گزرنا پڑ رہا ہے۔ یہ ٹیسٹ کافی متنازعہ ہے لیکن چین کے مطابق یہ کورونا کا پتہ لگانے کا سب سے محفوظ اور درست طریقہ ہے۔

      اس طرح ہوتا ہے اینل سویب ٹیسٹ
      کورونا کا اینل سویب ٹیسٹ کافی متنازعہ ہے۔ اس میں ٹیسٹنگ کٹ کو متاثرہ شخص کے پرائیویٹ پارٹ کے اندر 5 سینٹی میٹر تک داخل کیا جاتا ہے۔ اس کے بعد اسے گھمایا جاتا ہے۔ ٹیسٹ سے پہلے سویب کٹ کو ٹوڑ دیا جاتا ہے۔ اس سے قبل چین سے بھی ایسے ٹیسٹ کی خبریں سامنے آئی تھیں۔ اس کے بعد تنازع بڑھتا دیکھ کر اسے روک دیا گیا۔ لیکن اب سرمائی اولمپکس سے ٹھیک پہلے اسے ایک بار پھر اپنایا جا رہا ہے۔

      سرمائی اولمپکس جلد آرہے ہیں۔
      سرمائی اولمپکس 4 فروری سے چین میں منعقد ہونے والے ہیں۔ چین میں بھی کورونا کے کیسز بڑھ رہے ہیں۔ اس حوالے سے چین اپنی حفاظت کے لیے اینل سویب ٹیسٹ کر رہا ہے۔ چین اس کھیل کی بحفاظت میزبانی کر کے دنیا میں اپنا تسلط قائم کرنے کی تیاری کر رہا ہے۔ ان گیمز کو محفوظ بنانے کے لیے چین نے پورے بیجنگ میں لاک ڈاؤن نافذ کر دیا ہے۔ لوگ راشن لینے کے لیے بھی باہر نہیں جا پا رہے ہیں۔ ایسے میں چین کے اس اینل سویب ٹیسٹ کی خبر نے ایک بار پھر چین کی بدنامی کر دی ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: