உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Shenzhen: چین کےٹکنالوجی ہب شینزین میں مکمل لاک ڈاؤن! صفرکووڈپالیسی پرعوام کاشدید ردعمل

    دنیا میں پھر کورونا کا خطرہ، چین نے 90 لاکھ کی آبادی والے شہر میں لاک ڈاون نافذ کیا

    دنیا میں پھر کورونا کا خطرہ، چین نے 90 لاکھ کی آبادی والے شہر میں لاک ڈاون نافذ کیا

    Locked Down in Shenzhen: شینزین کے صحت عامہ کے ایک اہلکار لن ہینچینگ نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ یہاں کے شہریوں کو زیادہ سے زیادہ گھر پر رہنا چاہیے اور اجتماعات سے گریز کرنا چاہیے۔ انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ پابندیوں سے کتنے لوگ متاثر ہوئے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • INTER, Indiachinachinachina
    • Share this:
      چین کے ٹکنالوجی ہب شینزین (Shenzhen) کے زیادہ تر رہائشی ریاست گیر لاک ڈاؤن کی وجہ سے سخت پریشانیوں کا سامنا کررہے ہیں۔ کیونکہ 18 ملین آبادی والے شہر میں بڑے پیمانے پر کورونا وائرس (COVID-19) کے ضمن میں ٹسٹنگ جاری ہے اور لاک ڈاؤن قواعد پر عمل آواری کو یقینی بنانے کے لیے سخت اقدامات کیے جارہے ہیں۔

      لاک ڈاؤن کی وجہ سے پورے شینزین میں بس اور سب وے سروسز کو معطل کردیا ہے، تاکہ شہریوں کو ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقلی کو روکا جاسکے۔ شہری حکام نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے بارے میں غلط انداز میں افواہیں پھیلائی جارہی ہیں۔ جس سے بچنے کی ضرورت ہے۔ شہری حکومت نے ہفتے کے روز اپنے سرکاری وی چیٹ (WeChat) اکاؤنٹ پر شائع ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ شہر کی زیادہ تر آبادی والے چھ اضلاع کے رہائشیوں کا ہفتے کے آخر میں دو بار ٹیسٹ کیا جائے گا، جس سے لوگوں کی کام کرنے والی زندگی پر پڑنے والے اثرات کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔

      رائٹرز کے جائزے کے مطابق چھ بڑے اضلاع کو ہائی رسک ایریاز کے طور پر نامزد کیا گیا ہے۔ یہاں اگلے سات دن تک لاک ڈاؤن نافذ رہے گا، اگر مزید مثبت کیسز پائے جاتے ہیں تو اس میں توسیع ممکن ہے۔ اس لیے احتیاط کی ضرورت ہے۔ لوگوں کو اپنے گھروں میں ہی رہنے کی ہدایت جاری کی گئی ہے۔ جس کی وجہ سے شہر کی معاشی سرگرمیاں شدید طور پر متاثر ہوئی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:

      ’’نصیر الدین شاہ، شبانہ اعظمی اور جاوید اختر ٹکڑے ٹکڑے گینگ کے سلیپر سیل کے ممبر‘‘ Narottam Mishra

      یہ بھی پڑھیں:

      Pakistani Taliban: اسلام آبادکےساتھ پاکستانی طالبان نےجنگ ​​بندی کی ختم، معاہدےکی خلاف ورزی کالگایاالزام

      شینزین کے صحت عامہ کے ایک اہلکار لن ہینچینگ نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ یہاں کے شہریوں کو زیادہ سے زیادہ گھر پر رہنا چاہیے اور اجتماعات سے گریز کرنا چاہیے۔ انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ پابندیوں سے کتنے لوگ متاثر ہوئے ہیں۔ چھ اضلاع کے اہلکار نے بتایا کہ ہر گھر کے ایک فرد کو دو دنوں میں ایک بار ان کے کمپاؤنڈ سے خوراک، ادویات اور ضروریات خریدنے کی اجازت دی جائے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: