உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    OMG: دو سال کے بچے میں نظر آئی جوانی کی نشانی، عضو تناسل میں ہوئی تبدیلی سے ڈاکٹرس حیران

    OMG: دو سال کے بچے میں نظر آئی جوانی کی نشانی، عضو تناسل میں ہوئی تبدیلی سے ڈاکٹرس حیران ۔ علامتی تصویر ۔

    OMG: دو سال کے بچے میں نظر آئی جوانی کی نشانی، عضو تناسل میں ہوئی تبدیلی سے ڈاکٹرس حیران ۔ علامتی تصویر ۔

    World OMG News: برطانیہ میں میڈیکل سائنسز کو چیلنج کرنے والا ایک معاملہ سامنے آیا ہے ۔ یہاں ایک دوسال کے بچے میں ابھی سے جوانی کی نشانی نظر آنے لگی ہے ۔ بچے میں علامت ایسی ہے جو 16 سال کے لڑکے میں نظر آتی ہے ۔

    • Share this:
      لندن : برطانیہ میں میڈیکل سائنسز کو چیلنج کرنے والا ایک معاملہ سامنے آیا ہے ۔ یہاں ایک دوسال کے بچے میں ابھی سے جوانی کی نشانی نظر آنے لگی ہے ۔ بچے میں علامت ایسی ہے جو 16 سال کے لڑکے میں نظر آتی ہے ۔ اس بچے کا وزن بارہ کلو ہے ، مگر اس بچے کے وزن کی وجہ چربی نہیں بلکہ مسلز ہیں ۔

      ڈیلی میل کی ایک رپورٹ کے مطابق عام طور پر کسی لڑکے یا لڑکی میں میچوریٹی کی علامتیں 12 سے 16 سال کی عمر میں نظر آتی ہیں اوران کے جسم اور اعضا ئے تناسل میں تبدیلی نظر آتی ہے، لیکن اس بچے میں دو سال کی عمر میں ہی ایسے ڈیولپمنٹس پائے گئے ہیں۔ ڈاکٹروں نے اس کو ایک نایاب معاملہ بتایا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: 14 سال میں 16 بچوں کی ماں بن گئی خاتون، ابھی مزید بچوں کی چاہت میں بے چین ہے جوڑا


      رپورٹ کے مطابق بچے کی ماں کا کہنا ہے کہ بچے کا بلڈ ٹیسٹ ہوا ہے ۔ رپورٹ میں سامنے آیا ہے کہ بچے میں سیکس ہارمون ٹیسٹوسٹیران کی سطح کافی زیادہ تھی ۔ یہ ہارمون مردوں میں زیادہ مقدار میں بنتا ہے ، لیکن ایک بچے میں ہارمون کی سطح اتنی زیادہ ملنی چونکانے والا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: شادی کی پہلی ہی رات دولہے کو خوش کرنے کیلئے دلہن نے جوش میں کرڈالا ایسا کام، پہنچ گئی اسپتال


      ڈاکٹروں کا ماننا ہے کہ بچے کی یہ صورتحال آرٹیفیشیل ٹیسٹوسٹیران کے رابطے میں آنے سے ہوسکتی ہے ۔ ایسا اس لئے کہا گیا ہے کیونکہ بچے کے والد کو ٹیسٹس سے وابستہ سنگین بیماری ہے ۔ اس کیلئے وہ کئی سالوں سے روزانہ جلد پر ٹیسٹوسٹیران جیل کا استعمال کررہے تھے۔

      ٹیسٹوسٹیران جیل کا استعمال کرنے کیلئے اس کو کندھے ، بانہوں یا پیٹ پر لگایا جاتا ہے ۔ ایسا کرنے کے بعد جلد اس کو جذب کرلیتی ہے ۔ ڈاکٹرس کا کہنا ہے کہ ایسا ہوسکتا ہے کہ والد نے اس کو لگایا ہو اور پھر وہ بچے کے رابطے میں آیا ہو ، اس لئے اس جیل کا اثر بچے تک پہنچ گیا ہو ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: