ہوم » نیوز » عالمی منظر

ہندستان نے نیپال سے کہا، بے بنیاد بیان نہ دئیے جائیں

کٹھمنڈو۔ ہندستان نے فساد زدہ علاقوں میں ہندستان کی مبینہ مداخلت کو لے کر نیپالی لیڈران کی جانب سے دیے گئے بے بنیاد بیانات کو لے کر نیپال کو اپنی تشویش سے آگاہ کر دیا ہے۔

  • Share this:
ہندستان نے نیپال سے کہا، بے بنیاد بیان نہ  دئیے جائیں
کٹھمنڈو۔ ہندستان نے فساد زدہ علاقوں میں ہندستان کی مبینہ مداخلت کو لے کر نیپالی لیڈران کی جانب سے دیے گئے بے بنیاد بیانات کو لے کر نیپال کو اپنی تشویش سے آگاہ کر دیا ہے۔

کٹھمنڈو۔ ہندستان نے فساد زدہ علاقوں میں ہندستان کی مبینہ مداخلت کو لے کر نیپالی لیڈران کی جانب سے دیے گئے بے بنیاد بیانات کو لے کر نیپال کو اپنی تشویش سے آگاہ کر دیا ہے۔ ہندستان نے کہا ہے کہ اس سے غلط فہمی پیدا ہوتی ہے اور اس سے دوستانہ دو طرفہ تعلقات متاثر ہوں گے۔ نیپال میں ہندستان کے سفیر رنجیت رائے نے نائب وزیر اعظم اور وزیر داخلہ بامدیو گوتم کے ساتھ ملاقات میں ہندستان کی تشویش ظاہر کی۔ ایک بیان میں گوتم نے پہلے کہا تھا کہ انہوں نے سنا ہے کہ بڑی تعداد میں درانداز جنوب سے آئے ہیں۔

ہندستانی مشن نے ایک بیان میں کہا کہ سفارت خانے کے نوٹس میں نائب وزیر اعظم بامدیو گوتم کے بیان کو لایا گیا ہے۔ اس سے پہلے نئے آئین کے خلاف مظاہرہ کر رہے ہزاروں نیپالی لوگوں کی پولیس کے ساتھ جھڑپ میں ایک اور شخص کی موت ہو گئی جس سے تشدد میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 11 ہو گئی۔ صورت حال کو دیکھتے ہوئے حکومت نے ہندستان سے متصل ایک ضلع میں فوج تعینات کر دی ہے۔

کیلالی ضلع کے ٹيكاپور میں کرفیو لگا دیا گیا ہے جہاں کل ملک کو سات صوبوں میں تقسیم کرنے کے خلاف مظاہرہ کر رہے لوگوں کے حملے میں ایک سینئر پولیس اہلکار سمیت سات سکیورٹی اہلکاروں اور ایک بچے کی موت ہو گئی تھی۔ پولیس نے کہا تھا کہ تشدد میں آٹھ سکیورٹی اہلکاروں کی موت ہوئی لیکن بعد میں اعداد و شمار پر نظر ثانی کرکے اسے سات کر دیا گیا۔

First published: Aug 26, 2015 08:14 AM IST