உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Sri Lanka: آج سری لنکا کی کابینہ میں 21 ویں آئینی ترمیم پر ہوگی بحث، کیا ہے خاص؟ کیا بدل جائیں گے سری لنکا کے حالات

    اپوزیشن نےآئینی ترمیم کی پیش تجویز کی ہے۔

    اپوزیشن نےآئینی ترمیم کی پیش تجویز کی ہے۔

    کئی جماعتوں نے 21 ویں ترمیم کے مختلف ورژن تجویز کیے ہیں، جن میں سے کم از کم ایک میں ایگزیکٹو صدارت کو ختم کرنے کی دفعات شامل ہیں۔ یہ فوری طور پر واضح نہیں ہو سکا کہ کابینہ پیر کو کون سا مسودہ لے گی۔

    • Share this:
      سری لنکا (Sri Lanka) کے وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے (Prime Minister Ranil Wickremesinghe) کے دفتری ذرائع نے کہا کہ آئین میں مجوزہ 21 ویں ترمیم کو آج یعنی پیر 16 مئی 2022 کو کابینہ کے اجلاس میں زیر بحث لایا جائے گا۔ وزیر اعظم کے دفتر نے ایک بیان میں کہا کہ اس کے بعد اسے وزراء کی کابینہ کے سامنے منظوری کے لیے پیش کیا جائے گا۔

      کئی جماعتوں نے 21 ویں ترمیم کے مختلف ورژن تجویز کیے ہیں، جن میں سے کم از کم ایک میں ایگزیکٹو صدارت کو ختم کرنے کی دفعات شامل ہیں۔ یہ فوری طور پر واضح نہیں ہو سکا کہ کابینہ پیر کو کون سا مسودہ لے گی۔ وکرما سنگھے نے اتوار (15 مئی 2022) کو سری لنکا کے موجودہ معاشی بحران اور ادویات، خوراک اور کھاد کی فراہمی میں ممکنہ مدد پر بات چیت کے لیے ورلڈ بینک اور ایشیائی ترقیاتی بینک کے نمائندوں سے بھی ملاقات کی۔

      نومنتخب وزیراعظم نے ہفتہ کو غیر ملکی سفیروں سے بھی ملاقات کی جہاں سری لنکا کی امداد پر بین الاقوامی کنسورشیم کی تشکیل کے حوالے سے بات چیت ہوئی۔

      یہ بھی پڑھئے : اعظم خان کے بیٹے عبداللہ اور بیوی تزئین فاطمہ کے خلاف جاری ہوا غیر ضمانتی وارنٹ

      بیان میں کہا گیا نکہ یہ بتاتے ہوئے کہ بات چیت مثبت رہی ہے، وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت کو اس آنے والے ہفتے کے لیے ایندھن کی ضرورت کی ادائیگی کے لیے فنڈز کے حصول کے فوری چیلنج کا سامنا ہے۔ بینکوں میں ڈالر کی قلت کی وجہ سے، حکومت اب ضروری فنڈنگ ​​حاصل کرنے کے دوسرے آپشنز تلاش کر رہی ہے۔ ان کے دفتر نے کہا کہ وکرما سنگھے سے پیر کو ملک میں مالیاتی بحران کی مکمل وضاحت کی توقع ہے۔

      سری لنکا میں جاری اقتصادی اور سیاسی بحران کے درمیان بڑے سیاستداں رانل وکرم سنگھے ملک کے نئے وزیر اعظم بن گئے ہیں ۔ صدر کے میڈیا دفتر نے بتایا کہ 73 سالہ رانل نے وزیر اعظم کے عہدہ کا حلف اٹھا لیا ہے ۔ خیال رہے کہ بدھ کو قوم کے نام ایک خطاب میں صدر گوٹابایا راج پکشے نے اعلان کیا تھا کہ اس ہفتہ ملک کو نیا وزیر اعظم مل جائے گا اور ان کی کابینہ کی بھی تشکیل ہوجائے گی۔

      مزید پڑھیں: Gold: سونے سے ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی! جانیے دنیا کی کونسی ہے وہ کمپنی؟

      اس سے پہلے ملک میں جاری اقتصادی بحران کو لے کر ہورہے احتجاج کے دوران پیر کو وزیر اعظم مہندا راج پکشے نے منتخب سرکار کو ہٹا کر اپنے عہدہ سے استعفی دیدیا تھا ۔ اس دن راجدھانی کولمبو میں جم کر ہنگامہ ہوا تھا ۔ متعدد مقامات پر تشدد اور آگ زنی کے واقعات پیش آئے تھے ۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: