உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Sri Lanka: سری لنکا میں سیاسی طوفان، سیاسی پارٹیاں رانیل کےنئے صدرکےطورپرخواہشمندنہیں

    وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے

    وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے

    ذرائع نے بتایا کہ سیاسی جماعتیں ایسے صدر کو قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں جس کی عوامی حمایت نہ ہو اور پارلیمنٹ میں ایک بھی رکن پارلیمنٹ نہ ہو۔ حالات کو سنبھالنے کی ان کی قائدانہ صلاحیت پر بھی سوالات اٹھ رہے ہیں۔

    • Share this:
      ذرائع کا کہنا ہے کہ سات دہائیوں کے بدترین معاشی بحران کے درمیان سری لنکا (Sri Lanka) کی سیاسی جماعتیں وزیر اعظم رانیل وکرما سنگھے (Ranil Wickremesinghe) کو نیا صدر تسلیم کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔ دریں اثنا اعلیٰ ذرائع نے کہا کہ ہندوستان صورتحال کو قریب سے دیکھ رہا ہے اور چاہتا ہے کہ نظام برقرار رہیں۔

      سری لنکا کی قوم 22 ملین افراد پر مشتمل ہے، وہ اپنے انتہائی تکلیف دہ معاشی بحران سے گزر رہا ہے۔ یہ ملک مہینوں کے طویل بلیک آؤٹ، خوراک اور ایندھن کی شدید قلت اور تیزی سے بڑھتی ہوئی مہنگائی کا شکار ہے۔

      پارلیمنٹ میں ایک بھی رکن پارلیمنٹ نہیں!

      ذرائع نے بتایا کہ سیاسی جماعتیں ایسے صدر کو قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں جس کی عوامی حمایت نہ ہو اور پارلیمنٹ میں ایک بھی رکن پارلیمنٹ نہ ہو۔ حالات کو سنبھالنے کی ان کی قائدانہ صلاحیت پر بھی سوالات اٹھ رہے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ اس کے علاوہ وہ مقبول لیڈر نہیں ہیں اور انہوں نے کبھی ضرورت کے وقت منصوبہ نہیں کیا۔

      دریں اثنا ہندوستانی حکومت کے اعلیٰ ذرائع نے کہا کہ حکومت ہند چاہتی ہے کہ ان کے ملک اور سری لنکا کے لوگوں کے لیے جو کچھ اچھا ہو، وہ ہو۔ ہندوستانی حکومت سری لنکا کے لوگوں کی کسی بھی مدد کے لیے ہمیشہ دستیاب ہے۔

      وزیراعظم ہاؤس میں آگ لگ گئی:

      کولمبو میں ’ففتھ لین‘ پر مظاہرین 73 سالہ وکرماسنگھے کے گھر میں داخل ہوئے اور اس جگہ کو آگ لگا دی جس کے بعد زمین پر مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے درمیان کشیدہ صورتحال پیدا ہو گئی۔ فوری طور پر یہ واضح نہیں ہوسکا کہ آیا وہ حملے کے وقت اندر ہی تھے۔ حکام نے بتایا کہ مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کی شیلنگ کے باوجود وہ اس کے گھر میں داخل ہوئے اور گھر کو آگ لگا دی۔ آن لائن پوسٹ کی گئی ویڈیوز میں مظاہرین کو گھر کو آگ لگانے کے بعد خوشی کا اظہار کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ آتشزدگی کے الزام میں تین مظاہرین کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

      قبل ازیں دن میں حکومت مخالف مظاہرین کولمبو میں صدارتی ہاؤس میں داخل ہوئے۔ صدر کا ٹھکانہ معلوم نہیں تھا اور خیال کیا جاتا ہے کہ 73 سالہ رہنما بڑے ہجوم کے پہنچنے سے پہلے ہی گھر سے نکل گئے تھے۔ دریں اثنا کولمبو میونسپل کونسل (سی ایم سی) کے فائر بریگیڈ نے کہا کہ انہیں اطلاع ملی ہے کہ کولمبو میں وزیر اعظم کی نجی رہائش گاہ میں آگ لگ گئی ہے اور اس کی ٹیمیں بدامنی کی وجہ سے مقام تک نہیں پہنچ سکیں۔

      یہ بھی پڑھیں: Ajmer Dargah: عیدالاضحیٰ کےموقع پردرگاہ اجمیرشریف میں عقیدت مندوں کی کمی، تاجرین کاکاروبارمتاثر

      ملک گیر مظاہرے:

      ملک میں صدر گوتابایا راجا پاکسے کی قیادت میں حکومت کے استعفے کے لیے بے مثال مظاہرے دیکھنے میں آئے۔ راجا پاکسے جمعہ کو اپنی سرکاری رہائش گاہ سے فرار ہو گئے تھے۔

      یہ بھی پڑھیں: Elon Musk نے Twitter ڈیل رد کرنے کا کیا اعلان، کمپنی کرے گی مسک پر مقدمہ

      سری لنکا کے آئین کے مطابق موجودہ صدر کے مستعفی ہونے کے بعد وزیراعظم خود بخود صدر بن جاتا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ ان کے مواخذے پر سنجیدگی سے غور کیا جا رہا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: