شامی باغیوں نے امن مذاکرات میں شامل ہونے سے انکارکیا

عمان۔ شامی باغی گروپ نے قزاقستان کے دارالحکومت آستانہ میں آج سے شروع ہو رہے امن مذاکرات میں شریک نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔

Mar 14, 2017 03:42 PM IST | Updated on: Mar 14, 2017 03:45 PM IST
شامی باغیوں نے امن مذاکرات میں شامل ہونے سے انکارکیا

فائل فوٹو

عمان۔ شامی باغی گروپ نے قزاقستان کے دارالحکومت آستانہ میں آج سے شروع ہو رہے امن مذاکرات میں شریک نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ باغیوں کے ترجمان اسامہ ابو زید نے کہا کہ انہوں نے مذاکرات میں شرکت نہ کرنے کا حتمی فیصلہ کیا ہے کیونکہ روس باغیوں کے قبضے والے علاقے میں شہریوں کے خلاف فضائی حملے روکنے اور شامی فوج کی طرف سے جنگ بندی کی خلاف ورزی کو روکنے کے لئے دباؤ بنانے میں ناکام رہا ہے۔ انہوں نے کہا، ’اس وقت آستانہ امن مذاکرات میں شامل نہ ہونے کا فیصلہ شام میں شہریوں کے خلاف روس کی طرف سے مسلسل کئے جا رہے حملے اور شامی فوج کو دی جا رہی حمایت کے نتیجے میں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں اپنے اہم حامی ترکی کو مطلع کر دیا گیا ہے۔‘ ترکی کے حمایت یافتہ سلطان مراد باغی بریگیڈ کے سربراہ کرنل عثمان نے کہا کہ روس کو جنگ بندی کی خلاف ورزی کو ختم کرنے اور بمباری روکنے کے مطالبہ سے متعلق خط بھیجا تھا جس کا باغی انتظار کر رہے تھے۔

مسٹر عثمان نے روس کی طرف سے شہریوں پر مسلسل کئے جا رہے حملے اور باغیوں کے غلبے والے علاقے میں شامی سکیورٹی فورسز کی کارروائی کی شکایت کرتے ہوئے کہا، ’اس میں ابھی تک کچھ بھی لاگو نہیں ہو سکا ہے۔‘ شامی باغی گروپ نے ہفتہ کو روس کی حمایت یافتہ امن مذاکرات کو اگلی تاریخ تک بڑھانے کو کہا تھا۔ اس کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں مذاکرات حال ہی میں سات سے 20 مارچ تک جنگ بندی کے اعلان کو درست طور پر نافذ کرنے کا انحصار شامی حکومت اور اس کے اتحادی کے عزم پر ہوگا۔

Loading...

Loading...