உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Taliban in Afghanistan:طالبان کا نیا فرمان-ٹی وی پر پروگرام نشر کرتے وقت خواتین کا چہرہ ڈھانپنا لازمی

    طالبان نے ٹی وی چینلز میں کام کرنے والی خواتین میزبان کے لئے جاری کیا نیا فرمان ۔

    طالبان نے ٹی وی چینلز میں کام کرنے والی خواتین میزبان کے لئے جاری کیا نیا فرمان ۔

    Taliban in Afghanistan: اس اعلان کے جواب میں افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن نے تشویش کا اظہار کیا کہ یہ فیصلہ خواتین اور لڑکیوں سمیت افغانوں کے انسانی حقوق کے تحفظ اور احترام کے حوالے سے کئی یقین دہانیوں کے برعکس ہے۔

    • Share this:
      Taliban in Afghanistan: جب سے طالبان نے افغانستان پر قبضہ کیا ہے اس کا اصل چہرہ سامنے آگیا ہے۔ خواتین کی دلچسپی، تعلیم اور ملازمت کی آزادی کی بات کرنے والے طالبان نے اب دوسری بار افغانستان میں خواتین کی زندگی اجیرن کر دی ہے۔ اپنی نئی پابندیوں میں طالبان حکومت پہلے ہی خواتین پر بہت سی پابندیاں عائد کر چکی ہے۔ اب جبکہ طالبان حکومت ایک نئے حکم نامے کے ساتھ تیار ہے، طالبان نے ٹی وی چینلز پر کام کرنے والی تمام خواتین پریزینٹرز کو پروگرام پیش کرتے وقت اپنے چہرے ڈھانپنے کی ہدایت کی ہے۔ طلوع نیوز نے ٹویٹ کرکے یہ اطلاع دی۔

      حکم نامے کو جاری رکھتے ہوئے، نائب اخلاقی اور اطلاعات و ثقافت کی وزارتوں نے اسے حتمی فیصلہ قرار دیا اور کہا کہ یہ حکم افغانستان کے تمام میڈیا اداروں کو جاری کر دیا گیا ہے۔

      خواتین کے ڈرائیونگ لائسنس پر بھی روک
      اس ماہ کے شروع میں، افغانستان کے سب سے ترقی پذیر شہر ہرات میں حکام نے ڈرائیونگ انسٹرکٹرز سے کہا کہ وہ خواتین کو لائسنس جاری کرنا بند کر دیں۔ڈرائیونگ اسکولوں کی نگرانی کرنے والے ہرات کے ٹریفک مینجمنٹ انسٹی ٹیوٹ کے سربراہ جان آغا اچکزئی نے کہا، "ہمیں زبانی طور پر خواتین ڈرائیوروں کو لائسنس جاری کرنے سے روکنے کی ہدایت کی گئی ہے۔"

      مرد کے بغیر ہوائی سفر پر بھی پابندی
      طالبان نے مبینہ طور پر افغانستان ایئر لائنز کو بتایا ہے کہ خواتین کسی مرد سرپرست کے بغیر اندرون ملک یا بین الاقوامی پروازوں میں سفر نہیں کر سکتیں۔

      خواتین نے احکامات پر جتایا شدید اعتراض
      درجنوں افغان خواتین نے طالبان رہنماؤں کے حجاب پہننے کے نئے حکم کے خلاف احتجاج کیا ہے۔ طالبان کی زیر قیادت حکومت جسے عالمی برادری نے تسلیم کیا ہے، اب خواتین کے حقوق کی خلاف ورزی کر رہی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      NATO Membership: سویڈن اور فن لینڈ آج نیٹو کی رکنیت کی بولی کرائیں گےجمع، آخر روس کیوں...؟

      یہ بھی پڑھیں:
      سیکورٹی فورس پر جان لیوا حملے کرنے والیTehreek e Talibanکے ساتھ پاکستان نے پھر شروع کی بات

      اس اعلان کے جواب میں افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن نے تشویش کا اظہار کیا کہ یہ فیصلہ خواتین اور لڑکیوں سمیت افغانوں کے انسانی حقوق کے تحفظ اور احترام کے حوالے سے کئی یقین دہانیوں کے برعکس ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: