உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    طالبان نے ہندستان کو لکھا خط، کہا۔ کابل سے پھر شروع کریں فلائٹ سروس

    کابل کے آسمان میں ایک گھنٹے تک ہوا میں چکر لگاتا رہا ایئرانڈیا کا طیارہ ، جانئے کیوں ۔ علامتی تصویر ۔

    کابل کے آسمان میں ایک گھنٹے تک ہوا میں چکر لگاتا رہا ایئرانڈیا کا طیارہ ، جانئے کیوں ۔ علامتی تصویر ۔

    طالبان حکومت نے افغانستان اور ہندستان کے درمیان فلائٹ سروس دوبارہ شروع کرنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      کابل۔ طالبان حکومت نے افغانستان اور ہندستان کے درمیان فلائٹ سروس دوبارہ شروع کرنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ اے این آئی  ANI  کی خبر کے مطابق طالبان نے اس معاملے میں حکومت ہند کو خط بھی لکھا ہے۔ یہ خط 7 ستمبر کو افغانستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کے قائم مقام وزیر حمید اللہ اخونزادہ نے ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن آف انڈیا (ڈی جی سی اے DGCA) ارون کمار کو لکھا ہے۔ شہری ہوا بازی کی وزارت Ministry of Civil Aviation)   اس خط پر غور کر رہی ہے۔
      آپ کو بتا دیں کہ 15 اگست کو بھارت نے کابل کے لیے اپنی تمام پروازوں پر پابندی لگا دی تھی۔


      خط میں کیا لکھا تھا
      اخونزادہ نے ڈی جی سی اے DGCA کو لکھا ، "جیسا کہ آپ اچھی طرح جانتے ہیں کہ کابل ایئر پورٹ کو امریکی افواج نے نقصان پہنچایا تھا اور غیر فعال کر دیا تھا لیکن ہمارے دوست قطر کے تکنیکی سپورٹ سے اس ایئرپورٹ کو ایک بار پھر سے چالو کر دیا ہے۔ اس سلسلے میں ایک NOTAM (ایئر میں کو نوٹس)  6 ستمبر 2021 کو جاری کیا گیا تھا۔

      ہندستان  نے نہیں دی طالبان کو منظوری:
      ہندستان نے ابھی تک طالبان کی عبوری حکومت کو منظوری نہیں دی ہے۔  حالانکہ دوحہ میں قطر میں ہندوستان کے سفیر دیپک متل اور طالبانی لیڈر شیر محمد عباس اسٹان کزئی نے ملاقات کر چکے ہیں۔ طالبان نے 30 اگست کو امریکی افواج کے جانے کے بعد افغانستان پر قبضہ کر لیا۔ بھارت سے کابل جانے والی آخری پرواز 21 اگست کو شہریوں کو نکالنے کے لیے گئی تھی۔ ایئر انڈیا کی پرواز نے پہلے دوشنبے اور پھر نئی دہلی کے لیے اڑان بھری کی۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: