ہوم » نیوز » عالمی منظر

تھائی لینڈ سے میانمار کے 68 مہاجرین کی اپنی مرضی سےگھر واپسی

بینکاک۔ تھائی لینڈ-میانمار سرحد کے نزدیک پناہ گزین کیمپوں سے آج میانمار کے ایک پناہ گزین خاندان کو ان کی خواہش کے مطابق وطن روانہ کرکے پہلی رضامندی واپسی کی شروعات کی گئی۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 25, 2016 09:34 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
تھائی لینڈ سے میانمار کے 68 مہاجرین کی اپنی مرضی سےگھر واپسی
بینکاک۔ تھائی لینڈ-میانمار سرحد کے نزدیک پناہ گزین کیمپوں سے آج میانمار کے ایک پناہ گزین خاندان کو ان کی خواہش کے مطابق وطن روانہ کرکے پہلی رضامندی واپسی کی شروعات کی گئی۔

بینکاک۔ تھائی لینڈ-میانمار سرحد کے نزدیک پناہ گزین کیمپوں سے آج میانمار کے ایک پناہ گزین خاندان کو ان کی خواہش کے مطابق وطن روانہ کرکے پہلی رضامندی واپسی کی شروعات کی گئی۔ اس کے تحت میانمار کے 68 پناہ گزینوں کی ایک ٹیم کو وطن بھیجا جانا ہے۔ اقوام متحدہ پناہ گزین ایجنسی (اقوام متحدہ) نے بتایا کہ پناہ گزینوں کی واپسی کو تھائی لینڈ اور میانمار کی حکومتوں کی جانب سے فروغ ملا ہے۔ تھائی لینڈ کی سرحد کے نزدیک نو کیمپوں میں ہزاروں پناہ گزین رہ رہے ہیں۔ میانمار میں سیاسی اور اقتصادی غیر یقینی صورتحال کے دور کی وجہ سے پناہ گزینوں کے لئے گھر لوٹنا کافی مشکل ہے تاہم اس سال کے آغاز میں وہاں جمہوری حکومت بننے کے بعد حالات پہلے سے بہتر ہوئے ہیں۔


ایجنسی کے سینئر کوآرڈینیٹر این ہال نے بتایا کہ مغربی ریاست راچابري کے ایک کیمپ میں رہ رہے ایک خاندان کو میانمار بھیجا گیا ہے۔ مغربی تاک ریاست سے بیسیوں لوگوں کو کل میانمار کے لئے روانہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا، ’’یہ قدم سنگ میل ہے لیکن یہ بڑے پیمانے پر ملک سے نکالے جانے کا آغاز نہیں ہے۔میانمار حکومت نے بھی ان لوگوں کے لئے شناختی کارڈ جاری کرتے ہوئے انہیں اپنا شہری بتایا ہے۔‘‘انہوں نے کہا کہ جن لوگوں نے بھی وطن لوٹنے کا فیصلہ کیا ہے، ان سب نے پہلے اپنے اہل خانہ سے تصدیق کر لی ہے کہ ان کا میانمار لوٹنا محفوظ ہے۔‘‘ تھائی لینڈ کے نو کیمپوں میں ایک لاکھ سے زیادہ پناہ گزین رہتے ہیں۔ ان میں سے کچھ 30 سال سے زیادہ وقت سے یہاں رہ رہے ہیں۔

First published: Oct 25, 2016 09:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading