உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کیا طالبان انٹرنیشنل کمیونٹی کی نظر میں اب کھٹکے گا؟ کابل دھماکے کے انتقام کا اعلان!

    Youtube Video

    امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا، حملے میں امریکی فوجیوں کی ہلاکت پر مشتعل جو بائیڈن نے کہا ہے کہ نہ تو ہم اسے بھولیں گے اور نہ ہی معاف کریں گے۔

    • Share this:
      امریکی صدر جو بائیڈن نے کابل ایئرپورٹ پر خودکش دھماکے کیلئے ذمہ دار آئی ایس آئی ایس سمیت دیگردہشت گرد تنظیموں کو خبردار کیا ہے اور واضح طور پر کہا ہے کہ اب انہیں اس کی قیمت چکانی پڑے گی۔ حملے میں امریکی فوجیوں کی ہلاکت پر مشتعل جو بائیڈن نے کہا ہے کہ نہ تو ہم اسے بھولیں گے اور نہ ہی معاف کریں گے۔ اب ہم شکار کریں گے اور انہیں ان اموات کی قیمت چکانی پڑے گی۔اس کے ساتھ بائیڈن نے کہا کہ ہم امریکی شہریوں کو افغانستان سے بچائیں گے۔ ہم اپنے افغان اتحادیوں کو نکالیں گےاور ہمارا مشن جاری رہے گا۔ صدر جو بائیڈن نے کہا کہ کابل ائیرپورٹ کے باہر ہونے والے حملوں میں ہلاک ہونے والے امریکی سروس کے اہلکار ہیرو تھے۔

      امریکی صدر نے کابل دھماکوں میں ہلاک ہونے والوں کو "ہیرو" قرار دیا ۔امریکی صدر جو بائیڈن نے ایک لمحے کی خاموشی اختیار کی اور کابل دھماکوں میں ہلاک ہونے والے امریکی فوجیوں کے اہل خانہ سے اظہارِتعزیت کی۔ اپنے پیغام میں ، بائیڈن نے کابل دھماکوں میں اپنی جانیں گنوا دینے والے امریکی سروس ممبروں کو "ہیرو" قرار دیا۔ انہوں نے کہا ، جن لوگوں کو ہم نے آج کھو دیا ہے انہوں نے اپنی جانیں سلامتی ، دوسروں کی خدمت اور امریکہ کی خدمت میں دی ہیں۔
      افغانستان کے دارالحکومت کابل (Kabul Blast)میں ایک بعد بعد دیگرے دھماکوں کے بعد اب امریکی صدر جو بائیڈن (Joe Biden)نے سخت موقف اختیار کیا ہے۔ اس حملے میں ایک درجن سے زائد امریکی شہری بھی ہلاک ہوئے ہیں۔ امریکی صدر جو بائیڈن نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ امریکی فوج اس حملے میں ملوث دہشت گرد گروہ کے خلاف حملوں کو تیز کرے گی۔ وائٹ ہاؤس (White House)میں خطاب کرتے ہوئے بائیڈن نے کہا ، اس حملے کے مجرموں کو معلوم ہونا چاہیے کہ ہم انہیں معاف نہیں کریں گے۔ ہم ان دھماکوں کو کبھی نہیں بھولیں گے اور ہم ان کو ڈھونڈ کر مار ڈالیں گے۔

      امریکی صدر نے کہا ، انہیں ایسی بہت سی معلومات ملی ہیں جن کو جاننے کے بعد ہمیں یقین ہو گیا ہے کہ داعش ان حملوں میں ملوث ہے۔ امریکہ نے داعش کے ان رہنماؤں شناخت کی ہے کہ جو کابل میں حملوں میں ملوث ہیں۔ ہم ان تمام دہشت گردوں کو بغیر کسی بڑے فوجی آپریشن کے ڈھونڈ سکتے ہیں۔ وہ جہاں بھی پوشیدہ ہیں ، ہم ان تک پہنچ سکتے ہیں۔ بائیڈن نے کہا کہ انہوں نے امریکی فوجی کمانڈروں سے کہا ہے کہ وہ داعش پر حملے کے منصوبے پر کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہم جس جگہ کا انتخاب کرتے ہیں ، ہم وہاں درست حملے کرتے ہیں۔

      امریکی نے یہ بھی اعلان کیا کہ امریکہ اس ماہ کے آخر تک افغانستان سے اپنی فوجیں واپس بلانے کا منصوبہ مکمل کر لے گا ۔ بائیڈن نے اصرار کیا کہ ہم یہ کر سکتے ہیں اور ہمیں اس مشن کو پورا کرنا ہے اور ہم کریں گے۔ ہم دہشت گردوں سے نہیں ڈریں گے اور نہ ہی اپنے مشن کو روکیں گے۔ ہم اپنے شہریوں کو افغانستان سے نکالنے کا کام جاری رکھیں گے۔

      طالبان (Taliban) کے آنے کے بعد افغانستان (Afghanistan) میں کہرام مچا ہے۔ جمعرات کو راجدھانی کابل کے حامد کرزئی ایئر پورٹ کے باہر دو فدائین حملوں سمیت تین دھماکے ہوئے۔ ان میں اب تک 103 لوگوں کی موت ہوچکی ہے جبکہ 150 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔ کابل ایئرپورٹ کے حملے کی دل دہلا دینے والی تصویریں سامنے آئی ہیں۔ ان تصویروں کو دکھانے کا مقصد آپ کو ڈرانا نہیں ہے بلکہ صرف یہ بتانا ہے کہ افغانستان میں درد اور خوف کی داستان حقیقت ہے اور طالبان کے وعدے جھوٹے ہیں۔

      دو خودکش حملوں کے بعد ، ہوائی اڈے سے لگے نالے میں لاشیں اور زخمیوں کا ڈھیر لگ گیا۔ جب لوگوں کو نکالا گیا تو نالے کا پانی بھی خون سے لال ہو گیا ۔ کابل کے حامد کرزئی بین الاقوامی ہوائی اڈے کے باہر دھماکے ہوئے اور فضا میں دھول کا غبار اٹھا۔ دھواں ختم ہونے تک کئی لوگوں کی زندگیاں تباہ ہو چکی تھیں۔ ہر طرف خون ہی خون تھا۔

      یہ دھماکہ (Kabul Blast) ایسے وقت میں ہوا ہے، جب افغانستان پر طالبان کے کنٹرول کے بعد سے ہزاروں افغانی ملک سے نکلنے کی کوشش کر رہے ہیں اور گزشتہ کئی دنوں سے ایئرپورٹ پر جمع ہیں۔ کابل ایئر پورٹ سے بڑی سطح پر لوگوں کی نکاسی مہم کے درمیان مغربی ممالک نے حملے کا خدشہ ظاہر کیا تھا۔ اس سے پہلے دن میں کئی ممالک نے لوگوں سے ایئرپورٹ سے دور رہنے کی اپیل کی تھی کیونکہ وہ خودکش حملے کا خدشہ ظاہر کیا گیا تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: