ہوم » نیوز » عالمی منظر

جنگ میں اب تک 59 لوگوں کی موت، اسرائیل نے کہا، دشمن کو اب خاموش کرکے ہی لیں گے دم، حماس بولا، ہم بھی تیار

گذشتہ کئی دنوں سے اسرائیل اور فلسطین کے مابین جس طرح کے حالات بنے ہوئے ہیں اس کے مد نظر کہا جارہا ہے کہ ابھی خطرہ مزید بڑھ سکتا ہے۔

  • Share this:
جنگ میں اب تک 59 لوگوں کی موت، اسرائیل نے کہا، دشمن کو اب خاموش کرکے ہی لیں گے دم، حماس بولا، ہم بھی تیار
گذشتہ کئی دنوں سے اسرائیل اور فلسطین کے مابین جس طرح کے حالات بنے ہوئے ہیں اس کے مد نظر کہا جارہا ہے کہ ابھی خطرہ مزید بڑھ سکتا ہے۔

غزہ: اسرائیل  (Israel)  اور فلسطین  (Palestine) کے مابین ہفتوں سے جاری کشیدگی نے اب ایک پر تشدد شکل اختیار کرلی ہے۔ حماس  جسے اسرائیل ( فلسطین کی دہشت گرد تنظیم مانتا ہے) اس نے اسرائیل پر تقریبا 3000 راکٹ فائر کیے ہیں۔ اس حملے کے بعد  اسرائیل نے اپنی سب سے طاقتور فضائیہ کو میدان جنگ میں اتارا  جس کی وجہ سے فلسطین میں بڑے پیمانے پر تباہی مچی ہوئی ہے۔ اسرائیل اور فلسطین کے مابین اس جنگ میں اب تک 6 اسرائیلی اور 53 فلسطینی شہری ہلاک ہوچکے ہیں  جن میں ایک ہندوستانی خاتون بھی شامل ہے۔


گذشتہ کئی دنوں سے اسرائیل اور فلسطین کے مابین جس طرح کے حالات بنے ہوئے ہیں اس کے مد نظر  کہا جارہا ہے کہ ابھی خطرہ مزید بڑھ سکتا ہے۔ اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینٹس نے بدھ کی شام کو کہا ، ہماری فوج اب غزہ کی پٹی اور فلسطین پر حملے بند نہیں کرے گی۔ ہماری فوج اس وقت تک نہیں رکے گی جب تک دشمن مکمل طور پر خاموش نہیں ہوجاتا۔ دشمن کے مکمل طور پر خاتمے کے بعد ہی امن  بحالی پر کوئی بات چیت کی جاسکے گی۔




اسرائیل کے وزیر دفاع نے جس طرح کے بیانات دئے ہیں اس سے ایسا لگتا ہے کہ اسرائیل طویل عرصے تک قیام امن کے لئے اقدامات جاری رکھے گا۔ وزیر دفاع نے اپنے بیان میں کہا کہ ہم نے حماس کے 6 کمانڈروں کو ہلاک کیا ہے اور بڑی تعداد میں عمارتیں ، فیکٹریاں اور سرنگیں زمیں دوز کی جا چکی ہیں۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ یہ طے مانئے کہ ہمارے فوجی افسران اور جوان کسی بھی جنگ بندی کے حق میں نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فلسطین نے جس طرح کی صورتحال پیدا کی ہے اسے دیکھنے کے بعد اب ہمیں ایک طویل وقت کیلئے ایک حل تلاش کرنا ہی ہوگا۔



اسی کے ساتھ ہی حماس کے لیڈر ہانیہ نے کہا ہے کہ اگر اسرائیل جنگ کو طڑھانا چاہتا ہے تو ہم اس کے لئے تیار ہیں جس طرح سے اسرائیل نے حملہ کیا ہے ، اس کے بعد ہم رکنے کو تیار نہیں ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ سال 2014 کے بعد دونوں طرف سے سب مہلک ترین کارروائی کی گئی ہے۔
نگامی صورتحال کا اعلان اسرائیل اور فلسطین کے مابین جاری تشدد کی وجہ سے وزیر اعظم نیتن یاھو نے لوڈ شہر میں ہنگامی صورتحال کا اعلان کیا ہے۔ حکومت نے مظاہروں کے چلتے یہ فیصلہلیا ہے۔ نیوز ایجنسی اے این آئی نے ٹائمز آف اسرائیل کی رپورٹ کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس دوران تین مذہبی مقامات اور متعدد دکانوں کو نذر آتش کیا گیا ہے۔ مظاہرین نے متعدد گاڑیوں کو نذر آتش کردیا۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 13, 2021 10:19 AM IST