ہوم » نیوز » عالمی منظر

غیرملکی شدت پسندوں کو اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا طالبان

افغان طالبان نے کہا ہے کہ طالبان غیر ملکی لڑاکوں کو کسی بھی ملک کے خلاف اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔ دی نیوز نے افغان طالبان کے ذرائع کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں یہ اطلاع دی۔

  • Share this:
غیرملکی شدت پسندوں کو اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا طالبان
افغان طالبان نے کہا ہے کہ طالبان غیر ملکی لڑاکوں کو کسی بھی ملک کے خلاف اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔ دی نیوز نے افغان طالبان کے ذرائع کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں یہ اطلاع دی۔

پشاور: افغان طالبان نے کہا ہے کہ طالبان غیر ملکی جنگجووں کو کسی بھی ملک کے خلاف اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔ ’دی نیوز‘ نے افغان طالبان کے ذرائع کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں یہ اطلاع دی۔ رپورٹ کے مطابق طالبان نے افغانستان میں غیر ملکی تشدد پسند گروپوں کے بارے میں خدشات کو دور کرنے کے لئے کچھ علاقائی ممالک میں نمائندہ وفد بھیجا ہے۔ علاقائی ممالک کو یقین دہانی بھی کرائی ہے کہ طالبان غیر ملکی شدت پسندوں کو کسی بھی ملک کے خلاف اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔

طالبان کے سینئر اراکین کے مطابق ان کی اعلی قیادت نے شیخ عبدالحکیم کی صدارت والے قطر واقع سیاسی دفتر کو چین، ایران اور روس نیز کچھ دیگر ممالک کے ساتھ فوری رابطہ کرنے اور انہیں یقین دہانی کرانے کے لئے کہا گیا ہے کہ وہ وہاں کے باغیوں اور تشدد پسندوں کی حمایت نہیں کریں گے۔


رپورٹ کے مطابق طالبان نے افغانستان میں غیر ملکی تشدد پسند گروپوں کے بارے میں خدشات کو دور کرنے کے لئے کچھ علاقائی ممالک میں نمائندہ وفد بھیجا ہے۔
رپورٹ کے مطابق طالبان نے افغانستان میں غیر ملکی تشدد پسند گروپوں کے بارے میں خدشات کو دور کرنے کے لئے کچھ علاقائی ممالک میں نمائندہ وفد بھیجا ہے۔


طالبان کے ایک سینئر لیڈر نے کہا ’’روس، چین اور ایران سمیت کچھ ممالک کو افغانستان میں چھپے شدت پسندوں کے بارے میں کچھ اعتراض تھے۔ ہم نے امریکہ کے ساتھ سمجھوتہ کیا ہے کہ ہم غیر ملکی شدت پسندوں کو کسی دیگر ملک، خاص طور پر امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک کے خلاف اپنی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے‘‘۔ نام نہ طاہر کرنے کی شرط پر انہوں نے کاہ کہ طالبان کے وفد نے روس، ایران اور کچھ وسط ایشیائی ممالک کا دورہ کیا اور انہیں یقین دہانی کرائی کہ اقتدار میں آنے کے بعد انہیں افغانستان سے اپنی سکیورٹی کی فکر نہیں کرنی چاہیے ۔
انہوں نے کہا کہ وہ غیر ملکی لڑاکوں کو ملک چھوڑنے کے لئے نہیں کہیں گے کیونکہ وہ پناہ گزینوں کے طور پر ان کے پاس آئے تھے، لیکن انہیں مہمان نوازی کا فائدہ اٹھانے اور اپنے لئے مسائل پیدا نہیں کرنے دیں گے۔ انہوں نے کہا ’’ہم نے پاکستان کے تحریک طالبان پاکستان کے شدت پسندوں اور افغانستان میں بلوچ قوم پرست لیڈروں کے بارے میں بھی یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ پاکستان کے خلاف افغانستان کی زمین کا استعمال نہیں کرسکیں گے‘‘۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 12, 2021 04:54 PM IST