ہوم » نیوز » عالمی منظر

غزہ کے ہزاروں رہائشیوں کے گھر تباہ و برباد، تباہ شدہ گھروں کی تعمیر نو ضروری: جو بائیڈن

صدر جو بائیڈن (President Joe Biden) نے جمعہ کے روز غزہ کی تعمیر نو کے لئے کوششوں کو منظم کرنے میں مدد کرنے کا وعدہ کیا اور کہا کہ اسرائیل کے ساتھ ساتھ فلسطینی ریاست کا قیام تنازع کا واحد واحد حل ہے۔

  • Share this:
غزہ کے ہزاروں رہائشیوں کے گھر تباہ و برباد، تباہ شدہ گھروں کی تعمیر نو ضروری: جو بائیڈن
صدر جو بائیڈن (President Joe Biden) نے جمعہ کے روز غزہ کی تعمیر نو کے لئے کوششوں کو منظم کرنے میں مدد کرنے کا وعدہ کیا

غزہ کی تازہ ترین جنگ میں جنگ بندی کے اثر و رسوخ کے بعد ہزاروں بے گھر فلسطینی اپنے تباہ شدہ گھروں کی طرف لوٹنا شروع ہوگئے ہیں، بہت سے لوگوں نے اسے حماس مزاحمت اور غزہ کے گورنرز کے لئے ایک مہنگا لیکن واضح فتح کے طور پر دیکھا ہے۔گذشتہ11 دن سے جاری رہنے والی اس جنگ میں بڑی تعداد میں فلسطینی ہلاک ہوئے ہیں۔ جن میں خواتین بچے اور بزرگ شہری سبھی شامل ہیں۔ جس کی تعداد 250 کے قریب بتائی گئی ہے اور پہلے ہی غریب حماس کے زیر اقتدار غزہ میں بڑے پیمانے پر تباہی مچ چکی ہے۔


صدر جو بائیڈن (President Joe Biden) نے جمعہ کے روز غزہ کی تعمیر نو کے لئے کوششوں کو منظم کرنے میں مدد کرنے کا وعدہ کیا اور کہا کہ اسرائیل کے ساتھ ساتھ فلسطینی ریاست کا قیام تنازع کا واحد حل ہے۔بائیڈن نے یہ بھی کہا کہ اس نے اسرائیلیوں سے کہا تھا کہ وہ یروشلم کے فلیش پوائنٹ شہر میں "بین فرقہ جاتی لڑائی" بند کرو۔



تاہم انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ "اسرائیل کی سلامتی کے لئے میری وابستگی ، عزم میں کوئی ردوبدل نہیں ہے" اور انہوں نے مزید کہا کہ جب تک یہ خطہ "بے بنیاد" اسرائیل کے وجود کو تسلیم نہیں کرتا ہے "وہاں کوئی امن نہیں ہوگا۔"لیکن اسرائیل کے بیشتر باز آباد کاری والے علاقوں میں حماس کی جانب سے راکٹ بیراجوں نے زندگی کو ٹھہرا دیا اور متعدد فلسطینیوں نے مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی زیادتیوں کے جرات مندانہ رد عمل کے طور پر دیکھا تھا۔

جمعہ کے روز اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاھو (Israeli Prime Minister Benjamin Netanyahu) نے مزید حملوں کے خلاف انتباہ کرتے ہوئے کہا ، "اگر حماس کو لگتا ہے کہ ہم راکٹوں کی بوندا باندی برداشت کریں گے تو یہ غلط ہے۔" انہوں نے اسرائیل میں کہیں بھی جارحیت کے خلاف "نئی سطح کی طاقت" کے ساتھ جواب دینے کا عزم ظاہر کیا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 22, 2021 01:33 PM IST