تین ہندوستانی امن فوجیوں کو اقوام متحدہ نے دیا اعزاز، روچیرا کمبوج نے حاصل کیے اُن کے میڈل

تین ہندوستانی امن فوجیوں کو اقوام متحدہ نے دیا اعزاز، روچیرا کمبوج نے حاصل کیے اُن کے میڈل

تین ہندوستانی امن فوجیوں کو اقوام متحدہ نے دیا اعزاز، روچیرا کمبوج نے حاصل کیے اُن کے میڈل

اعزازات کے اعلان کے دوران کہا گیا کہ امن قائم کرنا اس بات کی ایک طاقتور مثال ہے کہ کس طرح مضبوط شراکت داری اور اجتماعی سیاسی ارادہ بامعنی تبدیلی کا باعث بن سکتا ہے۔

  • News18 Urdu
  • Last Updated :
  • Newyork
  • Share this:
    اقوام متحدہ میں ہندوستان کی مستقل نمائندہ روچیرا کمبوج نے جمعرات کو گزشتہ سال ڈیوٹی کے دوران اپنی جانیں گنوانے والے تین ہندوستانی امن فوجیوں کے اعزاز میں ’’ڈیگ ہیمراسکالڈ میڈل ‘‘حاصل کیے ۔ یہ تینوں ہندوستانی امن فوجی اُن  103 فوجی، پولیس اور سویلین امن دستوں میں شامل ہیں جنہیں یہ اعزاز دیا جائے گا۔ یہ اعزاز حاصل کرنے والوں کے نام شیشوپال سنگھ شابر طاہر علی اور سانوالا رام وشنوئی ہیں۔

    تین ہندوستانیوں میں بارڈر سیکورٹی فورس کے ہیڈ کانسٹیبل ششوپال سنگھ اور سنوالا رام وشنوئی شامل ہیں جنہوں نے کانگو چیک ریپبلک میں ادارے کے مشن کے ساتھ کام کیا اور وہیں شابر طاہر علی، عراق میں اقوام متحدہ امدادی مشن کے لیے خدمات انجام دے رہے تھے۔


    اس وقت اقوام متحدہ کے امن مشن میں ہندوستان تیسرا سب سے بڑا تعاون کرنے والا ملک ہے، جس کے 6,000 سے زیادہ فوجی اور پولیس اہلکار وسطی افریقی جمہوریہ، قبرص، کانگوچیک ریپبلک، لبنان، مشرق وسطیٰ اور مغربی صحارا میں تعینات ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں:

    'پی ٹی آئی لیڈروں پر ظلم کررہی پاکستانی سرکار'، عمران خان نے کہا: جس کو ٹکٹ دوں گا، اس کو ہی عوام کامیاب بنائیں گے

    یہ بھی پڑھیں:

    ’عالمی غذائی بحران پر قابو پانے کے لیے اجتماعی حل کی ضرورت‘،یو این میں روچیرا کمبوج نے تجویز کیے اقدامات

    اعزازات کے اعلان کے دوران جین پیئر لیکروکس، انڈر سیکرٹری جنرل برائے امن کیپنگ آپریشنز نے اپنے پیغام میں کہا کہ امن قائم کرنا اس بات کی ایک طاقتور مثال ہے کہ کس طرح مضبوط شراکت داری اور اجتماعی سیاسی ارادہ بامعنی تبدیلی کا باعث بن سکتا ہے۔ مقامی طبقوں اور دیگر شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کرتے ہوئے ہمارے اہلکار شہریوں کی حفاظت کرتے ہیں، سیاسی تصفیہ کو آگے بڑھاتے ہیں، اور پائیدار امن کی تلاش میں جدوجہد کو ختم کرنے میں مدد کرتے ہیں۔
    Published by:Shaik Khaleel Farhaad
    First published: