بڑی خبر ! ڈونالڈ ٹرمپ نے شام میں مکمل جنگ بندی کا کیا اعلان ، ترکی سے ہٹائی سبھی پابندیاں

معاہدہ کے نتیجہ میں شام میں 75 میل تک ترکی سیف زون کی حیثیت سے اپنے دستے تعینات کر سکے گا اور روس اور ترک افواج مشترکہ طور پر اس زون میں گشت کر سکیں گی۔

Oct 23, 2019 11:46 PM IST | Updated on: Oct 23, 2019 11:49 PM IST
بڑی خبر ! ڈونالڈ ٹرمپ نے شام میں مکمل جنگ بندی کا کیا اعلان ، ترکی سے ہٹائی سبھی پابندیاں

امریکی صدر ٹرمپ ۔ فائل فوٹو ۔

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے بدھ کو بتایا کہ ترکی کے ساتھ شام میں پوری طرح سے جنگ بندی پر اتفاق رائے قائم ہوگیا ہے اور ایسے میں انہوں نے ترکی سے سبھی پابندیاں ہٹالی ہیں ۔  انہوں نے وائٹ ہاؤس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج صبح ترک حکومت نے میری انتظامیہ کو بتایا ہے کہ وہ شام میں لڑائی اور جارحیت بند کر کے مستقل سیز فائر کے قیام پر عمل کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس فیصلہ کے بعد میں نے اپنے سکریٹری خزانہ کو ترکی پر لگائی گئی تمام پابندیاں اٹھانے حکم دیا ہے ، جو 14 اکتوبر کو ترکی کی جانب سے شمال مشرقی شام میں کردوں کے خلاف فوجی جارحیت کے جواب میں عائد کی گئی تھیں۔

یہ اعلان کرتے ہوئے امریکی صدر ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ اس وقت تک یہ ساری پابندی ہٹی رہیں گی ، جب تک کچھ ایسا نہیں ہوتا ، جس سے ہم خوش نہیں رہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ترکی ، شام اور سبھی طرح کے کرد صدیوں سے لڑائی کرتے آرہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس معاہدہ کے نتیجہ میں شام میں 75 میل تک ترکی سیف زون کی حیثیت سے اپنے دستے تعینات کر سکے گا اور روس اور ترک افواج مشترکہ طور پر اس زون میں گشت کر سکیں گی۔

خیال رہے کہ امریکی فوج کو اس علاقہ سے نکالنے کیلئے ٹرمپ کی مسلسل تنقید کی جارہی تھی ۔ خود ان کی پارٹی کے لیڈران بھی ایسا کرنے کیلئے ان کی مخالفت کرچکے ہیں ۔ کئی لیڈروں نے امریکہ میں بیان دیا تھا کہ ایسا کرکے ٹرمپ نے کردوں کو دھوکہ دیا ہے جو کبھی ان کے خاص ساتھی رہے ہیں ۔

امریکی صدر ٹرمپ نے اس فیصلہ کو امریکہ کے مفاد میں بتایا ۔ ان کا یہ بیان روسی فوج کے شمالی شام کی جانب بڑھنے کے کچھ ہی دیر بعد آیا ہے ۔ روسی فوج ، کرد لڑاکوں کو اس علاقہ سے دوسرے علاقوں میں بسانے کیلئے آرہی ہیں ۔

Loading...