ہوم » نیوز » عالمی منظر

ترکی کی خفیہ ایجنسیوں پر اردوغان کا کنٹرول رہے گا

انقرہ۔ ترکی کے صدر رجب طیب اردغان نے کہا ہے کہ ملک کا انٹیلی جنس محکمہ ان کے کنٹرول میں رہے گا اور فوج وزیر دفاع کے تئیں جوابدہ ہوگی۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 31, 2016 04:12 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ترکی کی خفیہ ایجنسیوں پر اردوغان کا کنٹرول رہے گا
انقرہ۔ ترکی کے صدر رجب طیب اردغان نے کہا ہے کہ ملک کا انٹیلی جنس محکمہ ان کے کنٹرول میں رہے گا اور فوج وزیر دفاع کے تئیں جوابدہ ہوگی۔

انقرہ۔ ترکی کے صدر رجب طیب اردغان نے کہا ہے کہ ملک کا انٹیلی جنس محکمہ ان کے کنٹرول میں رہے گا اور فوج وزیر دفاع کے تئیں جوابدہ ہوگی۔ ایک ٹیلی ویژن چینل سے بات کرتے ہوئے مسٹر اردغان نے کہا کہ ملک میں فوج کی ایک ٹکڑی کی طرف سے بغاوت کی ناکام کوشش کے بعد انہوں نے ایسا قدم اس لئے اٹھایا ہے کہ فوج سول کنٹرول میں رہے۔ اس درمیان ترکی کی فوجی اکادمیوں کو بند کر کے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ صدر نے کہا کہ تمام اسکولوں کے طلبہ اس یونیورسٹی میں داخلہ لےسکیں

گے۔


انہوں نے کہا کہ ملک کے فوجی سربراہ اور خفیہ محکمہ کے سربراہ صدر کے ماتحت ہو سکتے ہیں بشر طیکہ پارلیمنٹ ایسے بل کو منظور کرے۔ مسٹر اردغان نے کہا کہ ترکی اپنے

پیادہ فوجیوں کی تعداد میں کمی کرے گا لیکن ان کے هتھياروں کی تعداد کو بڑھایا جائے گا۔ فوج کے سارے ہسپتال اب صحت کی وزارت کے تحت ہوں گے۔ انہوں نے دنیا کے طاقتور ممالک کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی ملک نے یہاں کی موجودہ صورت حال کو جاننے کے لیے کسی افسر کو نہیں بھیجا اور بغاوت کی کوشش کے بعد کی کارروائی پر تشویش کا اظہار کر رہے ہیں۔  انہوں نے کہا، "ہم نے اس بغاوت کے ملزم فتح اللہ گولن کو امریکہ سے حوالگی کرانے کی کوشش کی ہےلیکن امریکہ نے اسے مسترد کر دیا۔ واضح رہے کہ ترکی کی فوج اور عدلیہ مسٹر گولن سے وابستہ لوگوں کی نشاندہی کر رہی ہے اور اب تک 10،137 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

First published: Jul 31, 2016 04:12 PM IST