உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Twitter Anniversary: آج ٹوئٹرکے 16 سال مکمل، کیسے بنا دنیاکا سب سے بڑا اور با اثرپلیٹ فارم؟

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    سال 2007 میں سوشل میڈیا کمپنی نے اپنے پلیٹ فارم پر ہیش ٹیگز متعارف کرائے، یہ ایک ایسا آئیڈیا ہے، جسے شروع میں زیادہ جوش و خروش سے استمعال نہیں کیا گیا۔ تاہم یہ ٹویٹر صارفین کے ساتھ منسلک ہوا اور ہیش ٹیگز اس کے کام کا ایک اہم حصہ بن گئے۔

    • Share this:
      ٹویٹر (Twitter) سال 2022 میں ایک سے زیادہ وجوہات کی بناء پر موضوع بحث رہا ہے۔ ان میں سب سے پہلے شریک بانی جیک ڈورسی (Jack Dorsey) کی جگہ نئے سی ای او پیراگ اگروال (Parag Agarwal) کی تقرری ہے اور پھر ایلون مسک (Elon Musk) کی طرف سے بڑا حصہ لینا بھی اس بحث کا حصہ ہے۔ ٹیسلا کے سی ای اوایلون مسک نے اس سال اپریل میں 44 بلین ڈالر میں سوشل میڈیا کمپنی کو سنبھالنے کا اعلان کیا۔

      تاہم مسک نے حال ہی میں اس معاہدے سے دستبرداری اختیار کی، یہ دعویٰ کیا کہ ٹوئٹر اسپام اکاؤنٹس پر ڈیٹا شیئر کرنے کو تیار نہیں تھا۔ لیکن ٹویٹر آج سوشل میڈیا کا بااثر اور کارکر پلیٹ فارم کیسے بنا؟

      جمعہ کو کمپنی کی 16 ویں سالگرہ کے موقع پر ہم اس کی تاریخ اور سالوں کے ارتقاء پر ایک نظر ڈالتے ہیں:

      ٹویٹر کا خیال پوڈ کاسٹنگ وینچر اوڈیو سے متاثر ہو کر سامنے آیا، جہاں جیک ڈورسی بطور انجینئر کام کرتے تھے۔ ایپل کے اپنے آئی ٹیونز میں پوڈ کاسٹ شامل کرنے کے اپنے منصوبوں کا اعلان کرنے کے بعد اوڈیو کی انتظامیہ نے محسوس کیا کہ انہیں ایک نئی سمت کی ضرورت ہے۔ اور اسی وقت ڈورسی نے ایک مختصر پیغام سروس (SMS) کا خیال پیش کیا جہاں صارف اپنے دوستوں کے ساتھ بلاگ کی طرح کی چھوٹی چھوٹی اپ ڈیٹس کا اشتراک کر سکتے تھے۔

      انتظامیہ کی جانب سے ابتدائی منظوری کے بعد ڈورسی نے اس پروجیکٹ پر کام شروع کیا جس کا ابتدائی عنوان "Twttr" تھا۔

      21 مارچ 2006 کو ڈورسی نے پہلی ٹویٹ بھیجی اور تقریباً چار ماہ بعد 15 جولائی 2006 کو بالآخر ٹوئٹر وجود میں آیا۔

      اگلے سال ٹویٹر انک اپنے خود مختار وجود میں آیا جس میں ڈورسی نے بطور سی ای او چارج سنبھالا۔

      ٹویٹر کے ساتھ ساتھ فیس بک نے پوری دنیا میں سوشل میڈیا انقلاب برپا کیا اور مائیکرو بلاگنگ سائٹ جلد ہی مقبولیت حاصل کرنے لگی۔

      سال 2007 میں سوشل میڈیا کمپنی نے اپنے پلیٹ فارم پر ہیش ٹیگز متعارف کرائے، یہ ایک ایسا آئیڈیا ہے، جسے شروع میں زیادہ جوش و خروش سے استمعال نہیں کیا گیا۔ تاہم یہ ٹویٹر صارفین کے ساتھ منسلک ہوا اور ہیش ٹیگز اس کے کام کا ایک اہم حصہ بن گئے۔

      سال 2009 میں ٹویٹر نے تصدیق شدہ اکاؤنٹ کا نظام متعارف کرایا اور بہت سی مشہور شخصیات کے اپنے ناموں کے جعلی اکاؤنٹس کی شکایت کے بعد تصدیقی ٹک (verification tick) متعارف کرایا۔ اسی سال پلیٹ فارم میں ریٹویٹ کا فیچر بھی شامل کیا گیا۔

      جیسا کہ ٹویٹر نے 2010 میں 100 ملین سے زیادہ نئے سال حاصل کیے، کمپنی نے منیٹائزیشن کی خصوصیت کے طور پر ایک فروغ شدہ ٹویٹس آپشن شامل کیا۔

      آن لائن غنڈہ گردی اور ایذا رسانی سے نمٹنے کے لیے ٹوئٹر نے ایک انسداد بدسلوکی کا اختیار شامل کیا جس سے صارفین کو اعتراض کرنے والے مواد کو فلٹر کرنے، بلاک کرنے اور رپورٹ کرنے کی اجازت ملتی ہے۔ کمپنی نے پلیٹ فارم میں ڈی ایم کی خصوصیت بھی شامل کی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: Ivana Trump Passes Away: سابق امریکی صدرڈونالڈ ٹرمپ کی پہلی بیوی ایوانا ٹرمپ نہیں رہیں

      مذکورہ خبر کے مطابق وزیراعظم کا پروگرام بظاہر ٹارگٹ تھا لیکن ایجنسیوں کی چوکسی کے باعث حملہ نہ ہو سکا۔ 2014 کے لوک سبھا انتخابات سے پہلے 2013 میں پٹنہ میں سلسلہ وار دھماکے ہوئے تھے جب کہ نریندر مودی نے شہر میں ایک عوامی جلسہ کیا۔ اس دوران چھ افراد ہلاک اور ایک سو کے قریب زخمی ہوئے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      پاکستانی صحافی نصرت مرزاکے الزامات کا سابق نائب صدرHamid Ansari نےدیا جواب، کہی یہ بڑی بات

      ٹویٹر کو ابتدائی طور پر 140 کرداروں (character) کی حد کے ساتھ متعارف کرایا گیا تھا، لیکن 2017 میں یہ بڑھ کر 280 ہو گیا۔

      سال 2020 میں ٹوئٹر نے اپنے پلیٹ فارم پر اسٹوریز اور اسپیس متعارف کرایا۔ تاہم بعد میں صارفین کی جانب سے ناقص ردعمل کی وجہ سے اسٹوریز کو ہٹا دیا گیا۔

      مجموعی طور پر یہ کہنا غلط نہ ہوگا کہ ٹویٹر ہماری زندگی کا ایک لازمی حصہ بن گیا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: