اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ایلون مسک کے الٹی میٹم کے باوجود برطرف کیے گئے ملازمین نے کی یہ حرکت، جانیے تفصیلات

    مسک کے اس اقدام کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

    مسک کے اس اقدام کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

    مسک نے پیر 21 نومبر تک کمپنی کا دفتر بند رکھنے کا حکم دیا۔ یہ سینکڑوں ملازمین کے بڑے پیمانے پر استعفیٰ کے بعد اٹھایا گیا قدم ہے۔ مسک نے اعلان کیا کہ وہ ملازمین سے انتہائی سخت کام کرانا چاہتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • USA
    • Share this:
      ٹویٹر کے کچھ سابق ملازمین نے ایلون مسک کے نئے ہارڈکور ٹویٹر پر دستخط کرنے سے انکار کردیا ہے۔ جس کے بعد بوسٹن آفس سے برطرف ہونے کی الٹی گنتی فلمائی گئی ہے۔ ٹویٹر کے تمام ملازمین کو ایک ٹائم فریم دیا گیا تھا جس کے اندر گوگل فارم پر ’ہاں‘ کو منتخب کرنا تھا۔ لندن اکنامک نے رپورٹ کیا کہ کیا وہ تجدید شدہ ٹویٹر پر رہنا چاہتے ہیں۔ جب کہ مسک کے الٹی میٹم کے بعد ٹویٹر سے بڑے پیمانے پر ملازمین کو باہر کا راستہ دیکھایا گیا ہے۔

      مسک نے پیر 21 نومبر تک کمپنی کا دفتر بند رکھنے کا حکم دیا۔ یہ سینکڑوں ملازمین کے بڑے پیمانے پر استعفیٰ کے بعد اٹھایا گیا قدم ہے۔ مسک نے اعلان کیا کہ وہ ملازمین سے انتہائی سخت کام کرانا چاہتے ہیں۔ اس سے پہلے ٹویٹر پر بہت سے کنٹریکٹ ورکرز نے دعویٰ کیا تھا کہ انہیں پتہ چلا کہ انہیں دوسرے لوگوں کی ٹویٹس پڑھ کر نوکری سے نکال دیا گیا ہے۔ کمپنی کی طرف سے کوئی باضابطہ اطلاع نہیں ہے۔

      جب نوکری سے نکالے جانے کا پتہ چلا!

      نیو یارک ٹائمز کے پوڈ کاسٹ کی میزبانی کرنے والے کیسی نیوٹن نے اس بارے میں ٹویٹ کیا جس کے بعد ٹوئٹر کی ایک سابق ملازمہ نے دعویٰ کیا کہ اسے نیوٹن کے ٹویٹ کے ذریعے نوکری سے نکالے جانے کا پتہ چلا۔ نیوٹن کو ایک کنٹریکٹ ورکر کی طرف سے ایک ٹیکسٹ میسج بھی موصول ہوا تھا کہ انہیں بھی اپنے ٹویٹس کے ذریعے نوکری سے نکالے جانے کا پتہ چلا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جب انہوں نے کمپنی کے سلیک اور ای میل میں لاگ ان کرنے کی کوشش کی تو انہیں احساس ہوا کہ یہ سب ختم ہو چکا ہے۔

      دریں اثنا ایلون مسک کے فیصلے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا ٹوئٹر اکاؤنٹ دوبارہ بحال کر دیا گیا، جہاں 51.8 فیصد ٹوئٹر صارفین نے ٹرمپ کے اکاؤنٹ کو واپس لانے کے حق میں ووٹ دیا۔ سابق امریکی صدر پر تشدد پر اکسانے کی وجہ سے ٹوئٹر پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔ ان کے اکاؤنٹ کی بحالی بہت سے ٹویٹر صارفین کو اچھی نہیں لگی جنہوں نے مسک کے اس اقدام کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

      یہ بھی پڑھیں: 


      ایک وائرل ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ ایک میٹ ملر اس وقت تک گنتی گنتی رہی جب تک کہ وہ اور بوسٹن کے دفتر میں اس کے کچھ ساتھیوں کو برطرف کر دیا گیا۔ جس نے ٹوئٹر پر نو سال سے زیادہ عرصے تک کام کیا۔ ملر اور اس کے ساتھیوں نے نئے سال کی طرز کا الٹی گنتی کی یہاں تک کہ وہ کمپنی کے پورٹلز تک رسائی کھو بیٹھے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: