உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سعودی عرب کی راجدھانی ریاض میں چلائی گئی سلامتی مہم میں دو دہشت گرد ہلاک

    چار جولائی دو ہزار سولہ کو دھماکہ کے بعد مسجد نبوی میں جمع ہوتے لوگ: تصویر: الجزیرہ

    چار جولائی دو ہزار سولہ کو دھماکہ کے بعد مسجد نبوی میں جمع ہوتے لوگ: تصویر: الجزیرہ

    دبئی۔ سعودی عرب کی راجدھانی ریاض میں چلائی گئی ایک سیکورٹی مہم میں بم دھماکوں اور دیگر حملوں کے دو ملزمان مارے گئے ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      دبئی۔  سعودی عرب کی راجدھانی ریاض میں چلائی گئی ایک سیکورٹی مہم میں بم دھماکوں اور دیگر حملوں کے دو ملزمان مارے گئے ہیں۔ وزارت داخلہ کے حکام نے اس بات کی اطلاع دی۔ وزارت داخلہ کے حکام نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ شمالی ریاض کے الیاسمین میں چلائی گئی سیکورٹی مہم میں سکیورٹی نے دونوں مشتبہ ملزمان کو گرفتار کرنے کی کوشش کی لیکن مشتبہ افراد نے سکیورٹی پر فائرنگ کی جس کا جواب دیتے ہوئے سکیورٹی نے دونوں دہشت گردوں کو مار گرایا۔ اس مہم میں ایک سیکورٹی جوان بھی زخمی ہوا ہے۔


      وزارت داخلہ کے ترجمان منصور الترکی کے مطابق ملزمان کی شناخت تائے ا لسياري اور طلال بن سمرن ال سعیدی کے طور پر کی گئی ہے۔ حکام نے بتایا کہ سياري کو بم بنانے میں مہارت حاصل ہے۔ اس پر اگست 2015 میں اسیر کی ایک مسجد کے باہر ہوئے خودکش بم دھماکے میں ملوث ہونے کا الزام ہے۔ اس بم دھماکے میں 15 لوگوں کی موت ہو گئی تھی۔


      حکام نے بتایا کہ سياري پر مدینہ اور جدہ میں استعمال ہوئے بم بنانے کا بھی الزام ہے۔
      وزارت داخلہ کے ایک ٹوئٹ میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کے شہزادہ محمد بن نائف جو ملک کے وزیر داخلہ بھی ہیں ، نے اسپتال جاکر زخمی جوان سے ملاقات بھی کی۔

      First published: