ہوم » نیوز » عالمی منظر

اسرائیل کا متحدہ عرب امارات اور بحرین کے ساتھ امن معاہدہ، ٹرمپ نے کہا۔ نئے مشرق وسطیٰ کا آغاز

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس معاہدہ کو ' نئے مشرق وسطیٰ کا آغاز' بتایا اور کہا کہ اس سے دنیا کے ایک اہم حصے میں اب امن قائم کیا جا سکے گا۔ ٹرمپ نے سمجھوتے پر دستخط کا ایک ویڈیو شئیر کیا اور لکھا ' دہائیوں کی تقسیم اور جدوجہد کے بعد آج ہم نے ایک نئے مشرق وسطیٰ کا آغاز کیا ہے۔ اسرائیل، متحدہ عرب امارات اور بحرین کے لوگوں کو مبارکباد۔

  • Share this:
اسرائیل کا متحدہ عرب امارات اور بحرین کے ساتھ امن معاہدہ، ٹرمپ نے کہا۔ نئے مشرق وسطیٰ کا آغاز
ٹرمپ کی موجودگی میں اسرائیل کا متحدہ عرب امارات اور بحرین کے ساتھ معاہدہ

واشنگٹن۔ اسرائیل نے سفارتی تعلقات معمول پر لانے کے لئے وائٹ ہاؤس میں متحدہ عرب امارات (متحدہ عرب امارات) اور بحرین کے ساتھ امن معاہدہ پر دستخط کئے ہیں۔ اس معاہدے کے دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ، اسرائیلی وزیر اعظم بنجامن نیتن یاہو ، متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ شیخ عبد اللہ بن زاید النہیان اور بحرین کے وزیر خارجہ عبداللطیف بن راشد الزیان موجود تھے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے منگل کو وائٹ ہاؤس میں تقریب کی میزبانی کی جہاں گزشتہ ایک ماہ کے کم عرصے کے دوران متحدہ عرب امارات اور بحرین دونوں نے ہی اسرائیل سے تعلقات کی بحالی کا اعلان کیا تھا۔


متحدہ عرب امارات اور بحرین اسرائیل کو تسلیم کرنے والے بالترتیب تیسرے اور چوتھے عرب ملک بن گئے ہیں جہاں اس سے قبل 1979 میں مصر اور 1994 میں اردن نے اسرائیل سے تعلقات بحال کر لئے تھے۔ تقریب سے قبل نیتن یاہو سے اوول آفس میں ملاقات کے دوران ٹرمپ نے کہا کہ بہت جلد مزید پانچ سے چھ ملک ہمارے ساتھ مل جائیں گے تاہم انہوں نے ان ملکوں کے نام واضح نہیں کئے۔



متحدہ عرب امارات اور بحرین کا کبھی بھی اسرائیل کے ساتھ جنگ ​​نہیں ہوا ہے اور دونوں عرب ممالک کے برسوں سے اسرائیل کے ساتھ غیر سرکاری تعلقات استوار رہے ہیں۔ نیتن یاہو نے کہا کہ اسرائیل ، متحدہ عرب امارات اور بحرین شراکت داری، خوشحالی اور امن کے ساتھ مستقبل میں سرمایہ کاری کے خواہاں ہیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس معاہدہ کو ' نئے مشرق وسطیٰ کا آغاز' بتایا اور کہا کہ اس سے دنیا کے ایک اہم حصے میں اب امن قائم کیا جا سکے گا۔ ٹرمپ نے سمجھوتے پر دستخط کا ایک ویڈیو شئیر کیا اور لکھا ' دہائیوں کی تقسیم اور جدوجہد کے بعد آج ہم نے ایک نئے مشرق وسطیٰ کا آغاز کیا ہے۔ اسرائیل، متحدہ عرب امارات اور بحرین کے لوگوں کو مبارکباد۔ بھگوان آپ سب کا بھلا کرے'۔



عمان بھی قطار میں

متحدہ عرب امارات اور بحرین کے بعد اب اس بات کا امکان بڑھتا دکھ رہا ہے کہ جلد ہی عمان کے ساتھ بھی اسرائیل کا امن سمجھوتہ ہو سکتا ہے اور اس کے ساتھ ہی ان دونوں ملکوں کے درمیان باقاعدہ سفارتی رشتوں کا آغاز ہو سکتا ہے۔ سال 2018 میں اسرائیل کے وزیر اعظم بنجامن نیتن یاہو عمان کے دورے پر بھی جا چکے ہیں۔ تب انہوں نے عمان کے اس وقت کے رہنما سلطان قابوس کے ساتھ مشرق وسطیٰ میں امن قائم کرنے کو لے کر تبادلہ خیال کیا تھا۔

حالانکہ، عمان نے ابھی اسرائیل کو تسلیم کرنے اور اس کے ساتھ کسی بھی طرح کے سمجھوتے کے امکانات کے بارے میں رسمی طور پر کچھ کہا نہیں ہے۔ لیکن، عمان نے بحرین اور اسرائیل کے امن سمجھوتے کا خیرمقدم کیا ہے اور اسے اسرائیل اور فلسطین کے درمیان امن قائم کرنے میں اہم رول نبھانے والا قدم بتایا ہے۔ اس کے بعد سے اسرائیل کے ساتھ عمان کے امن سمجھوتے کی قیاس آرائیاں تیز ہو گئی ہیں۔

یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 16, 2020 09:21 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading