ہوم » نیوز » عالمی منظر

UAE Travel Ban: ان 16 ممالک سے آنے والی پروازوں پر متحدہ عرب امارات نے لگائی پابندی، مکمل فہرست دیکھیں یہاں

کہ ’’کووڈ۔19 وبا کی کی موجودہ صورت حال کے پیش نظر متحدہ عرب امارات کو نئی پرواز اور مسافروں کی پابندیاں عائد کرنا پڑا۔ متحدہ عرب امارات کی حکومت اس صورتحال پر گہری نگاہ رکھی ہوئی ہے اور وہ ضرورت کے مطابق مزید اپ ڈیٹس اور ہدایات فراہم کرے گا‘‘۔

  • Share this:
UAE Travel Ban: ان 16 ممالک  سے آنے والی پروازوں پر متحدہ عرب امارات نے لگائی پابندی، مکمل فہرست دیکھیں یہاں
۔(تصویر:Shutterstock0)۔

جنرل سیول ایوی ایشن اتھارٹی (General Civil Aviation Authority) نے بتایا کہ اگلے حکم تک مجموعی طور پر 16 ممالک سے متحدہ عرب امارات کے اندرونی مسافروں کا سفر معطل رہے گا۔ان میں شامل ممالک میں افغانستان ، بنگلہ دیش ، جمہوریہ کانگو ، ہندوستان ، انڈونیشیا ، لائبیریا ، نمیبیا ، نیپال ، نائیجیریا ، پاکستان ، یوگنڈا ، سیرا لیون ، جنوبی افریقہ ، سری لنکا ، ویتنام اور زیمبیا شامل ہیں۔خلیج ٹائمز کے مطابق اتوار کو حفاظتی فیصلے کے ایک نئے سرکلر میں اتھارٹی نے پہلے جاری کردہ سفری پابندیوں کو برقرار رکھا ہے۔


اس میں کہا گیا ہے کہ ’’کووڈ۔19 وبا کی کی موجودہ صورت حال کے پیش نظر متحدہ عرب امارات کو نئی پرواز اور مسافروں کی پابندیاں عائد کرنا پڑا۔ متحدہ عرب امارات کی حکومت اس صورتحال پر گہری نگاہ رکھی ہوئی ہے اور وہ ضرورت کے مطابق مزید اپ ڈیٹس اور ہدایات فراہم کرے گا‘‘۔


دبئی اپئرپورٹ کی تصویر۔(shutterstock)۔
دبئی اپئرپورٹ کی تصویر۔(shutterstock)۔


جی سی اے اے نے کہا کہ سرکلر تمام ممالک کے مابین پروازوں اور مسافروں کی ہم کو برقرار رکھنے کے لئے جاری کیا گیا ہے۔اتھارٹی نے سفارت کاروں اور طبی ہنگامی صورتحال میں مبتلا افراد کے علاوہ متحدہ عرب امارات کے تمام شہریوں کو بھی ان ممالک کا سفر کرنے سے روک دیا ہے۔

پہلے بیان کردہ تمام دوسرے پروٹوکولز میں صرف متحدہ عرب امارات کے شہریوں ، سفارت کاروں ، گولڈ اور سلوررہائشی ویزا رکھنے والوں کو داخلے کی اجازت شامل ہے۔ جی سی اے اے نے کہا کہ نجی چارٹر جیٹ قواعد و ضوابط ابھی بھی موجود ہیں، آٹھ سے زیادہ مسافروں کو ایک پرواز میں سفر کی اجازت نہیں ہے۔

دبئی اپئرپورٹ کی تصویر۔(shutterstock)۔
دبئی اپئرپورٹ کی تصویر۔(shutterstock)۔


رواں سال اپریل سے ہی جنوبی ایشیائی ممالک جیسے ہندوستان ، پاکستان ، بنگلہ دیش ، اور سری لنکا کا اندرون ملک سفر معطل ہے۔ ان ممالک میں پھنسے ہزاروں تارکین وطن اپنی ملازمتوں اور کنبوں کی طرف لوٹنے کے شدت سے منتظر ہیں۔ بہت سے لوگ 14 دن تک کسی تیسرے ملک میں قرنطینہ سے گزر کر متحدہ عرب امارات جانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بیرون ملک جانے والی معطلی کی وضاحت کے علاوہ جی سی اے اے کے سرکلر میں اماراتی مسافروں کے لئے بھی پروٹوکول نکلا ہے جو کووڈ کے لئے مثبت جانچ پڑتال کرتے ہیں یا کسی مریض سے قریبی رابطے میں آتے ہیں

سرکلر میں بیان کیا گیا ہے کہ ’’تصدیق شدہ کووڈ 19 مریض یا وہ مریض جو کووڈ 19 مریضوں کے ساتھ قریبی رابطے میں آئے ہیں انہیں عام طور پر اپنی جگہ پر ہی رہنا چاہئے اور وہ اس وقت تک سفر نہیں کریں جب تک کہ وہ ملک کے قومی پروٹوکول پر مبنی تنہائی یا قرنطینہ کی مدت کو ختم کرنے کے معیار پر پورا نہ اتریں‘‘۔

’’اس میں متحدہ عرب امارات کے مسافر شامل ہیں جو گھر واپس جانا چاہتے ہیں یا وہ لوگ جو دوسرے ممالک میں سفر کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 20, 2021 01:39 PM IST