உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UAE: صدرِ متحدہ عرب امارات شیخ خلیفہ بن زید النہیان کا انتقال، عرب دنیا میں سوگ کی لہر

    شیخ خلیفہ بن زید النہیان (Sheikh Khalifa bin Zayed Al Nahyan) فائل فوٹو (تصویر: ANI)

    شیخ خلیفہ بن زید النہیان (Sheikh Khalifa bin Zayed Al Nahyan) فائل فوٹو (تصویر: ANI)

    شیخ خلیفہ بن زید النہیان 1948 میں پیدا ہوئے۔ شیخ خلیفہ کو 2004 میں اپنے طویل عرصے سے خدمت کرنے والے والد شیخ زید النہیان (Sheikh Zayed Al Nahyan) کی جگہ کے لیے منتخب کیا گیا جو 1971 میں تخت نشین ہوئے تھے۔

    • Share this:
      UAE President Sheikh Khalifa bin Zayed Al Nahyan dies: اماراتی سرکاری خبر رساں ایجنسی ڈبلیو اے ایم نے جمعہ کو اطلاع دی ہے کہ متحدہ عرب امارات (United Arab Emirates ) کے صدر شیخ خلیفہ بن زید النہیان (Sheikh Khalifa bin Zayed Al Nahyan) کا آج یعنی 13 مئی 2022 بروز جمعہ کو انتقال ہوگیا۔ وہ 73 سال کے تھے۔

      ایجنسی نے ٹویٹر پر لکھا کہ وزارت صدارتی امور نے اعلان کیا ہے کہ جھنڈوں کے ساتھ 40 دن کا سرکاری سوگ منایا جائے گا۔ وفاقی، مقامی سطحوں اور نجی شعبے میں وزارتوں اور سرکاری اداروں کو تین دن تک بند رکھا جائے گا۔ اطلاع کے مطابق شیخ خلیفہ بن زید النہیان کئی سال سے بیماری سے لڑ رہے تھے۔ وہ اپنے بھائی ابو ظہبی کے ولی عہد شہزادہ محمد بن زید (Abu Dhabi’s Crown Prince Mohammed bin Zayed) کے ساتھ حکومتی معاملات میں شریک رہے، لیکن طویل عرصے سے ناسازی صحت کی وجہ سے علیل تھے۔ ان کے جانشین کے بارے میں فوری طور پر کوئی اعلان نہیں کیا گیا۔

      شیخ خلیفہ بن زید النہیان نے 3 نومبر 2004 سے متحدہ عرب امارات کے صدر اور ابوظہبی کے حکمران کی حیثیت سے خدمات انجام دی۔ وہ اپنے والد مرحوم شیخ زاید بن سلطان النہیان کی جانشینی کے لیے منتخب ہوئے، جنہوں نے 1971 میں یونین کے بعد متحدہ عرب امارات کے پہلے صدر کے طور پر خدمات انجام دیں یہاں تک کہ شیخ زاید بن سلطان النہیان 2 نومبر 2004 کو انتقال کر گئے۔ سال 1948 میں پیدا ہونے والے شیخ خلیفہ متحدہ عرب امارات کے دوسرے صدر اور ابوظہبی کی امارات کے 16ویں حکمران تھے۔ وہ شیخ زید کے بڑے بیٹے تھے۔


      واضح رہے کہ شیخ خلیفہ بن زید النہیان 1948 میں پیدا ہوئے۔ شیخ خلیفہ کو 2004 میں اپنے طویل عرصے سے خدمت کرنے والے والد شیخ زید النہیان (Sheikh Zayed Al Nahyan) کی جگہ کے لیے منتخب کیا گیا جو 1971 میں تخت پر بیٹھے تھے۔

      کیرالہ کے وزیر اعلی پنارائی وجین نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے لکھا کہ ’’متحدہ عرب امارات کے صدر عزت مآب شیخ خلیفہ بن زید النہیان کے انتقال پر گہرا دکھ ہوا جنہوں نے کیرالہ کے ساتھ ہمیشہ خوشگوار تعلقات رکھے ہیں۔ وہ ایک وژنری رہنما تھے جنہوں نے امارات کو جدید بنانے میں کلیدی کردار ادا کیا۔ ان کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا‘‘۔



      متحدہ عرب امارات کے صدر بننے کے بعد سے شیخ خلیفہ نے وفاقی حکومت اور ابوظہبی کی حکومت دونوں کی ایک بڑی تنظیم نو کی صدارت کی ہے۔ ان کے دور حکومت میں متحدہ عرب امارات نے ایک تیز رفتار ترقی دیکھی ہے جس نے ملک کو ’دوسرا گھر کہنے والے لوگوں کے لیے باوقار زندگی‘ کو یقینی بنایا۔



      صدر منتخب ہونے کے بعد شیخ خلیفہ نے متحدہ عرب امارات کی حکومت کے لیے متوازن اور پائیدار ترقی کے حصول کے لیے اپنا پہلا اسٹریٹجک منصوبہ شروع کیا، جس میں متحدہ عرب امارات کے شہریوں اور رہائشیوں کی خوشحالی کو بنیادی اہمیت دی گئی۔ شیخ خلیفہ نے تیل اور گیس کے شعبے اور نیچے کی دھارے کی صنعتوں کی ترقی کو آگے بڑھایا جنہوں نے ملک کے معاشی تنوع میں کامیابی کے ساتھ تعاون کیا ہے۔

      مزید پڑھیں: Saudi Aramco: سعودی آرامکونےایپل کوبھی پیچھےچھوڑدیا، دنیاکاسب سےقیمتی اسٹاک بننے کاملااعزاز

      انہوں نے شمالی امارات کی ضروریات کا مطالعہ کرنے کے لیے پورے متحدہ عرب امارات کے وسیع دورے کیے، اس دوران انھوں نے ہاؤسنگ، تعلیم اور سماجی خدمات سے متعلق متعدد منصوبوں کی تعمیر کے لیے ہدایات دیں۔

      مزید پڑھیں: Madhya Pradesh: بنارس گیان واپی مسجد کی طرزپر اجین میں بھی شروع ہوا مسجد کا تنازعہ، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

      اس کے علاوہ انہوں نے فیڈرل نیشنل کونسل کے اراکین کے لیے نامزدگی کے نظام کو تیار کرنے کے لیے ایک پہل شروع کی، جسے متحدہ عرب امارات میں براہ راست انتخابات کے قیام کی جانب پہلا قدم کے طور پر دیکھا گیا۔

      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: