உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UK PM Election 2022:رشی سنک نے کیا اعتراف،برٹین کے وزیراعظم عہدے کی ریس میں ہوئے پیچھے، چل دیا اہم داؤ

    برطانوی وزیراعظم بننے کی ریس میں رشی سونک نے لز ٹرس سے پیچھے رہ جانے کا کیا اعتراف!

    برطانوی وزیراعظم بننے کی ریس میں رشی سونک نے لز ٹرس سے پیچھے رہ جانے کا کیا اعتراف!

    UK PM Election 2022: سنک نے کہا کہ میں آپ سب کا تعاون چاہتا ہوں۔ میں آپ سے وعدہ کرتا ہوں کہ میں ایک ایک ووٹ کے لیے لڑوں گا۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ وہ ٹیکس میں کٹوتی نہیں کرنے کے لئے ذمہ دار نہیں ہیں اور نہ ہی وہ قدامت پسند ہیں۔

    • Share this:
      UK PM Election 2022: وزیر اعظم بننے کے لیے رشی سنک اور لز ٹرس کے رمیان کانٹے کی ٹکر چل رہی ہے، وہیں اب خود سنک نے اعتراف کیا ہے کہ وہ اس لڑائی میں تھوڑا پیچھے ہوگئے ہیں۔ رشی سنک نے برطانیہ کے وزیر اعظم کے انتخاب میں اہم داؤ کھیلتے ہوئے کہا کہ وہ کنزرویٹو پارٹی کے اگلے رہنما اور برطانیہ کے وزیر اعظم بننے کی دوڑ میں کمزور ہیں لیکن وہ ہر ووٹ کے لیے اپنی لڑائی جاری رکھیں گے۔

      اس دوران انہوں نے اپنی بات کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ جب تک مہنگائی کنٹرول میں ہے پرسنل ٹیکس میں کمی نہیں کریں گے۔ اگرچہ انہوں نے کنزرویٹو ارکان سے کہا کہ ٹیکسوں میں کٹوتیوں سے لوگوں کی زندگیاں آسان نہیں ہوں گی لیکن اس پر ایمانداری سے عمل درآمد ہونا چاہیے۔ تاہم اس سے قبل رشی سنک نے کہا تھا کہ وہ لبھانے والی پالیسی سے دور رہیں گے۔ جب وہ وزیر خزانہ تھے تو انہوں نے بجلی کے بلوں میں کٹوتی سے انکار کر دیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی اب ان کے سُر ٹیکس کٹوتی کے حوالے سے بدلے ہوئے نظر آرہے ہیں۔

      ٹرس نے کیا یہ وعدہ
      وہیں، دوسری جانب ان کی حریف اور سیکرٹری خارجہ لز ٹرس نے اس دوران کہا کہ وہ عہدہ سنبھالتے ہی ٹیکس کو ختم کر دیں گی۔ ٹرس نے برطانیہ کے ٹیکس نظام کے مکمل جائزے کا وعدہ کرتے ہوئے اسے بہت پیچیدہ قرار دیا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اسے لوگوں کے مطابق ہونا چاہیے۔ ٹرس کو برتری اس طرح بھی حاصل ہوئی ہے کہ وزیر دفاع بین والیس نے اعلان کیا کہ وہ وزارت عظمیٰ کے لیے ٹرس کی حمایت کر رہے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Rishi Sunak on China:برطانوی وزیراعظم کے امیدواررشی سونک نے چین کوبتایا دنیاکے لئے بڑاخطرہ

      یہ بھی پڑھیں:
      جو آگ سے کھیلتے ہیں، اکثر جل جاتے ہیں، تائیوان پر جن پنگ نے بائیڈن کو دی دھمکی

      سنک نے مانگا تعاون
      5 ستمبر کو انتخابی نتائج کے اعلان سے پہلے یہ جوڑی تقریباً 175,000 پارٹی کے ارکان کے ووٹ حاصل کرنے کے لیے جدوجہد میں لگے ہوئے ہیں۔ سنک نے کہا کہ میں آپ سب کا تعاون چاہتا ہوں۔ میں آپ سے وعدہ کرتا ہوں کہ میں ایک ایک ووٹ کے لیے لڑوں گا۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ وہ ٹیکس میں کٹوتی نہیں کرنے کے لئے ذمہ دار نہیں ہیں اور نہ ہی وہ قدامت پسند ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: