اپنا ضلع منتخب کریں۔

    برطانیہ نے یورپی یونین کو کہا الوداع ، ڈیوڈ کیمرون کا استعفی کا اعلان ، دنیا بھر میں ہلچل

    • Share this:
      لندن : برطانیہ کے عوام کے ذریعہ یوروپی یونین سے نکلنے کی حمایت میں ووٹ دینے کے بعد وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے استعفی کا اعلان کردیا  ہے ۔ نتائج آنے کے بعد اپنے ایک خطاب میں کیمرون نے کہا کہ ان سے جو بھی ہوسکتا ہے تھا ، انہوں نے برطانیہ کی معیشت کیلئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اب ملک کو ایک نیا وزیراعظم چاہئے ، جو علاحدگی کے معاملہ پر یوروپی یونین سے بات چیت کرے۔ تاہم فی الحال کیمرون اگلے تین ماہ تک اس عہدہ پر برقرار رہیں گے اور اکتوبرتک برطانیہ کو نیا وزیر اعظم ملنے کی امید ہے۔
      خیال رہے کہ رکن رہنے یا اس سے باہر نکلنے پر ہوئے ریفرنڈم میں 52 فیصد لوگوں نے یورپی یونین سے باہر ہونے کے حق میں ووٹ دیا ہے۔جبکہ 48 فیصد ووٹروں نے یورپی یونین کے حق میں ووٹ دیا۔
      نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ شمال مشرقی انگلینڈ، ویلز اور مڈلینڈز میں زیادہ تر ووٹروں نے یوروپی یونین سے الگ ہونا پسند کیا جبکہ لندن، اسکاٹ لینڈ اور شمالی آئرلینڈ کے زیادہ تر ووٹروں نے یورپی یونین کے ساتھ ہی رہنے پر مہر لگائی۔ نتائج آنے کے ساتھ ہی برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کا وہ خواب بھی ٹوٹ گیا، جس میں انہوں نے عوام سے کہا تھا کہ وہ یوروپی یونین کے ساتھ رہنے کے حق میں ووٹ کریں۔
      First published: