ہوم » نیوز » عالمی منظر

اب برطانیہ کا سفر کرنے والے ہندوستانیوں کے لیے ادارہ جاتی قرنطینہ کی ضرورت نہیں! کووڈ سفری پابندیوں میں نرمی

برطانیہ کی حکومت کا ہندوستان کو 'ریڈ' سے 'امبر' تک اٹھانے کا فیصلہ ڈیلٹا ویرینٹ کے باوجود آیا ہے، جو پہلے ہندوستان میں پایا گیا تھا، برطانیہ میں اب بھی اس کے کیس سامنے آرہے ہیں، جس کی وجہ سے کورونا کیسوں میں زبردست اضافہ ہوا ہے۔

  • Share this:
اب برطانیہ کا سفر کرنے والے ہندوستانیوں کے لیے ادارہ جاتی قرنطینہ کی ضرورت نہیں! کووڈ سفری پابندیوں میں نرمی
لندن ایئر پورٹ کی تصویر۔(Shutterstock)۔

برطانیہ نے ہندوستان سمیت کچھ ممالک کے لیے اپنی تازہ ترین کووڈ۔19 ٹریول اپ ڈیٹ کو اپ ڈیٹ کیا ہے، اسے 8 اگست 2021 سے ’ریڈ‘ سے 'امبر' لسٹ میں منتقل کیا گیا۔برطانوی حکومت کی ویب سائٹ پر دستیاب معلومات کے مطابق اس میں کہا گیا ہے کہ انڈیا 8 اگست (مقامی وقت) صبح 4 بجے امبر لسٹ میں منتقل ہو جائے گا۔ ہندوستان کے علاوہ دیگر ممالک جنہیں 'امبر' کی فہرست میں منتقل کیا گیا ہے، ان میں بحرین ، جارجیا ، میکسیکو ، متحدہ عرب امارات ، قطر اور فرانس شامل ہیں۔


امبر لسٹ میں شامل ممالک کے لیے قانونی قواعد کے تحت مسافروں کو انگلینڈ پہنچنے سے پہلے اور بعد میں کووڈ 19 کا ٹیسٹ کرانا چاہیے۔


ممبئی ایئرپورٹ
ممبئی ایئرپورٹ


’’آپ کو انگلینڈ جانے سے پہلے 3 دن میں ٹیسٹ کرانا ہوگا۔ انگلینڈ پہنچنے پر آپ کو لازمی طور پر گھر میں قرنطینہ یا اس جگہ پر جہاں آپ 10 دن قیام کرسکتے ہیں، وہاں قرنطینہ ضروری ہے۔ یوکے ، قطر ، انڈیا اور بحرین کو ریڈ لسٹ سے امبر لسٹ میں منتقل کردیا جائے گا۔ تمام تبدیلیاں 8 اگست کو صبح 4 بجے نافذ ہوں گی۔

انہوں نے کہا کہ ’’اگرچہ یہ درست ہے کہ ہم اپنا محتاط رویہ جاری رکھتے ہیں، دنیا بھر میں خاندانوں ، دوستوں اور کاروباری اداروں سے رابطہ قائم کرنے کے خواہشمند افراد کے لیے مزید منزلیں کھولنا بڑی خوشخبری ہے ، یہ سب ہمارے کامیاب گھریلو ویکسینیشن پروگرام کی وجہ سے ہوپایا ہے‘‘۔

تاہم انگلینڈ پہنچنے کے بعد مسافروں کو قرنطینہ کرنے یا 8 دن کا ٹیسٹ لینے کی ضرورت نہیں ہے اگر کوئی فرد برطانیہ میں مکمل طور پر ویکسین یا بیرون ملک یوکے ویکسین پروگرام کے تحت یا انگلینڈ پہنچنے کے دن اور 18 سال سے کم عمر کا ہو۔ برطانیہ میں یا کسی ایسے ملک میں جس کے پاس ویکسینیشن پروگرام ہے جس کی منظوری برطانیہ کے منظور شدہ ویکسین ٹرائل کا حصہ ہے۔

اپریل میں برطانیہ کی حکومت نے ہندوستان کو 'ریڈ' لسٹ میں شامل کیا تھا کیونکہ کووڈ 19 کی دوسری لہر نے جنوبی ایشیائی ملک کو اپنی لپیٹ میں لے لیا تھا۔ 'ریڈ' لسٹ سفر پر پابندی عائد کرتی ہے اور برطانوی باشندوں کو واپس آنے کے لیے 10 دن کے ہوٹل کے لازمی قرنطینہ کا حکم دیتا ہے۔

برطانیہ کی حکومت کا ہندوستان کو 'ریڈ' سے 'امبر' تک اٹھانے کا فیصلہ ڈیلٹا ویرینٹ کے باوجود آیا ہے، جو پہلے ہندوستان میں پایا گیا تھا، برطانیہ میں اب بھی اس کے کیس سامنے آرہے ہیں، جس کی وجہ سے کورونا کیسوں میں زبردست اضافہ ہوا ہے۔

سات ممالک 'گرین' فہرست میں شامل:

دریں اثنا سات ممالک 'گرین' فہرست میں منتقل ہو رہے ہیں جرمنی ، آسٹریا ، سلووینیا ، سلوواکیہ ، لٹویا ، رومانیہ اور ناروے اور فرانس کو "امبر واچ لسٹ" سے نکال دیا گیا ہے۔

گرین لسٹ میں شامل ممالک کے لیے لوگوں کو ان ممالک سے واپس آنے پر قرنطینہ میں نہیں رہنا پڑے گا، چاہے ان کی ویکسینیشن کی حیثیت کچھ بھی ہو ، حالانکہ انہیں روانگی سے قبل کا ٹیسٹ لینا پڑے گا اور آنے کے ایک دو دن بعد بھی ٹسٹ ضروری ہے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Aug 05, 2021 12:26 PM IST