உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia Ukraine Conflict:ایزوستل سے زخمی فوجیوں اور شہریوں کو نکالنا چاہتا ہے یوکرین، روس سے کیا یہ مطالبہ

    Russia Ukraine War : ایزوستل میں اپنے زخمی شہریوں اور فوجیوں کو نکالنا چاہتا ہے یوکرین۔

    Russia Ukraine War : ایزوستل میں اپنے زخمی شہریوں اور فوجیوں کو نکالنا چاہتا ہے یوکرین۔

    Russia Ukraine Conflict: روس نے فروری کے آخر میں یوکرین پر اپنا پہلا حملہ کیا تھا۔ یہ سلسلہ اب تک جاری ہے۔ ان حملوں سے ناراض ہو کر امریکہ سمیت کئی مغربی ممالک نے یوکرین پر کئی پابندیاں عائد کر دی ہیں۔

    • Share this:
      کیو: Russia Ukraine Conflict: یوکرین میں حملے جاری ہیں۔ اسی سلسلے میں یوکرین نے روس سے اپیل کی ہے کہ وہ ماریوپول میں ایزوستل اسٹیل پلانٹ میں زخمی فوجیوں اور شہریوں کی مدد کرے۔ یوکرین کی نائب وزیر اعظم ایرینا ویریشچوک نے جمعرات کو روس سے پلانٹ پر حملوں میں زخمی ہونے والے شہریوں اور فوجیوں کو محفوظ انسانی راہداری کے ذریعے نکالنے کا مطالبہ کیا۔ ویریسچک نے ایک آن لائن پوسٹ میں کہا، 'تقریباً 1000 زخمی شہری اور 500 فوجی اہلکار ہیں۔ ان سب کو پلانٹ سے نکالنے کی ضرورت ہے۔

      ماریوپول پر روس نے کیا قبضہ کا دعویٰ!
      روسی وزیر دفاع سرگئی شوئیگو نے جمعرات کو صدر ولادیمیر پوتن کو بتایا کہ ملکی فوج نے ماریوپول پر مکمل قبضہ کر لیا ہے۔ مارچ کے اوائل میں جب روس نے ماریوپول پر حملہ کیا تو اس پلانٹ کے اندر تقریباً 8,100 یوکرینی فوجی موجود تھے اور اب بھی وہاں 2,000 سے زیادہ فوجی موجود ہیں۔ 1400 سے زائد دہشت گردوں نے اپنے ہتھیار ڈال دیے ہیں اور 142,000 سے زائد افراد کو شہر سے نکالا گیا۔ روس نے دو بار پلانٹ میں موجود لوگوں کے محفوظ انخلاء کی پیشکش کی لیکن کوئی آگے نہیں آیا۔ شوئیگو نے کہا کہ پلانٹ سے لوگوں کو نکالنے کے لیے دن میں دو گھنٹے کے لیے انسانی ہمدردی کی راہداری کا آپشن بھی پیش کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ’ہم نے ان کے لیے 90 بسیں اور 25 ایمبولینسیں تیار کیں اور حالات کو قابو میں رکھنے کے لیے کیمرے بھی لگائے۔‘ کوئی بھی پلانٹ چھوڑنے کے لیے آگے نہیں بڑھا۔ یوکرین کی 36ویں میرینز بریگیڈ کے کمانڈر سرگئی ویلینا نے دعویٰ کیا کہ پلانٹ کے اندر سینکڑوں شہری پھنسے ہوئے تھے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Chinaکو تائیوان نے کیاخبردار،کہا-دھمکیاں آزادی کی حفاظت کیلئے مضبوط کریں گی ہمارے ارادے

      یہ بھی پڑھیں:
      روس نے کیا دسNuclearبم چھوڑنے والی میزائل کا ٹسٹ، پوتن نے بتائی خوبیاں، کہی یہ بڑی بات

      روس نے فروری کے آخر میں یوکرین پر اپنا پہلا حملہ کیا تھا۔ یہ سلسلہ اب تک جاری ہے۔ ان حملوں سے ناراض ہو کر امریکہ سمیت کئی مغربی ممالک نے یوکرین پر کئی پابندیاں عائد کر دی ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: