உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine War: یوکرین نے امریکہ سے کیا بھاری ہتھیاروں کا مطالبہ، کیا ہوگا اس کا مطلب؟

    یوکرین نے امریکہ سے بھاری ہتھیاروں کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

    یوکرین نے امریکہ سے بھاری ہتھیاروں کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

    کھنٹی کے پولیس سپرنٹنڈنٹ امان کمار کے مطابق یہ کارروائی بدھ کو لواحقین کی طرف سے درج کرائی گئی شکایت کے جواب میں کی گئی۔ شکایت درج ہونے کے فوراً بعد ہم نے تفتیش شروع کی۔ ہم نے تمام چھ ملزمان کو پکڑ لیا ہے۔

    • Share this:
      یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی (President Volodymyr Zelenskiy) نے کہا کہ یوکرین آج یعنی 24 اپریل 2022 اتوار کے روز کیف (Kyiv) میں امریکی سیکرٹریز اور دفاع کے ساتھ ہونے والی بات چیت میں بھاری ہتھیاروں کو حاصل کرنے کی امید رکھتا ہے، ان کے بقول یوکرین کے لیے روس کے زیر قبضہ علاقے کو واپس لینے کے لیے ضروری سامان فراہم کرنا ضروری ہے۔

      یوکرائنی رہنما نے خبردار کیا کہ اگر روس نے جنگ زدہ شہر ماریوپول میں محصور ہمارے لوگوں کو تباہ کیا یا نئے مقبوضہ یوکرین کی سرزمین پر مزید الگ ہونے والی جمہوریہ بنانے کے لیے ریفرنڈم کرایا تو کیف، ماسکو (Moscow) کے ساتھ بات چیت چھوڑ دے گا۔ ایک جذباتی نیوز کانفرنس میں ایک موقع پر انہوں نے کہا کہ ان کا خیال تھا کہ روس جوہری ہتھیار استعمال کر سکتا ہے لیکن وہ یہ نہیں ماننا چاہتے کہ ماسکو ایسا کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ یوکرین کے لیے مزید ہتھیار حاصل کرنا بالکل ضروری ہے۔

      انہوں نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ’’جیسے ہی ہمارے پاس (زیادہ ہتھیار) ہوں گے، جیسے ہی ان میں سے کافی ہوں گے، مجھ پر یقین کریں، ہم فوری طور پر اس یا اس علاقے کو واپس لے لیں گے، جس پر عارضی طور پر قبضہ کیا گیا ہے۔‘‘ انہوں نے اتوار کو بات چیت کے لیے امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن اور وزیر دفاع لائیڈ آسٹن کی قریب آمد کا اعلان کرنے کے لیے Kyiv کے میٹرو سسٹم میں منعقدہ اپنی نیوز کانفرنس کا استعمال کیا۔

      مزید پڑھیں: Jobs in Telangana: تلنگانہ میں 80 ہزار نئی نوکریوں کا اعلان، لیکن پہلے سے وعدہ شدہ اردو کی 558 ملازمتیں ہنوز خالی!

      انہوں نے کہا کہ کل ہم ان ہتھیاروں کی درست فہرست پر بات کریں گے جو ہمارے لیے ضروری ہیں۔ ہم اس کی توقع کرتے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں ... طاقتور بھاری ہتھیار۔ انھوں نے ایک موقع پر یہ کہا کہ وہ ہر اس یوکرائن کا درد سمجھتے ہیں، جس نے روس کی جنگ میں بچے کھوئے تھے اور یہ کہ ہفتہ کے میزائل حملوں میں اوڈیسا شہر میں آٹھ افراد ہلاک ہوئے تھے جن میں ایک تین ماہ کا بچہ بھی شامل تھا۔

      انہوں نے کہا کہ ماریوپول میں محصور یوکرائنی افواج کے لیے ہفتہ کا دن ابھی تک کے سب سے مشکل دنوں میں سے ایک تھا اور کیف نے ماسکو کو ان کی رہائی کے لیے ہر ممکن قسم کے تبادلے کے معاہدے کی پیشکش کی تھی۔ یوکرین کی افواج ماریوپول شہر میں سٹیل کے کام میں محصور ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: