اپنا ضلع منتخب کریں۔

    انڈیانا میں سیکورٹی خدشات کے تحت ٹک ٹاک پر کیس درج، بچوں کو گمراہ کرنے کا الزام

    انڈیانا میں سیکورٹی خدشات کے تحت ٹک ٹاک پر کیس درج، بچوں کو گمراہ کرنے کا الزام

    انڈیانا میں سیکورٹی خدشات کے تحت ٹک ٹاک پر کیس درج، بچوں کو گمراہ کرنے کا الزام

    دلیل دی گئی ہے کہ ایپ میں یوزرس کی حساس اور نجی معلومات ہے، لیکن ٹک ٹاک صارفین کو دھوکہ دیتا ہے اور کہتاہے کہ جانکاری محفوظ ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Washington
    • Share this:
      امریکی ریاست انڈیانا کے اٹارنی جنرل نے چینی سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک پر مقدمہ دائر کیا ہے۔ مقدمے میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ٹک ٹاک قابل اعتراض مواد کے سطح اور سیکورٹی کے بارے میں اپنے یوزروں، خاص طور سے بچوں کو گمراہ کرتا ہے۔

      ریپبلکن اٹارنی جنرل ٹاڈ روکیتا نے دعویٰ کیا کہ ویڈیو ایپ کا کہنا ہے کہ یہ 13 سال او راس سے زیادہ عمر کے یوزرس کے لیے محفوظ ہے، لیکن اس پر نوجوان یوزرس کے لیے قابل اعتراض مواد 24 گھنٹے دستیاب رہتا ہے، جو کہ امریکی صارفین سے اربوں ڈالر کمانے کی ٹک ٹاک کی کوشش ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      طالبان نے کیا پاکستانی فوجی کا سے قتل، پھر پیڑ پر لٹکائی لاش، لوگوں کو دی کھلے عام دھمکی

      افغانستان پر قبضے کے بعد پہلی مرتبہ طالبان نے دی سرعام پھانسی، قتل کے ملزم کو سزا

      صرف بوڑھوں کے ساتھ رومانس کرتی ہے 25 سال کی یہ حسینہ، وجہ جان کر اڑجائیں گے ہوش!

      یہ بھی پڑھیں:
      بائیڈن نے ویزا کے لیے انتظار کا وقت کم کرنے پر دیا زور، میمورنڈم پر غور کرنے کی درخواست کی

      ٹائم میگزین نے جاری کی لسٹ، یوکرین کے صدر زیلینسکی بنے 'پرسن آف دی ایئر'

      ایلون مسک دنیا کے سب سے امیر شخص کا خطاب کھونے کے دہانے پر، اس ارب پتی نے دی ٹکر

      روکیتا کی ایک الگ شکایت میں دلیل دی گئی ہے کہ ایپ میں یوزرس کی حساس اور نجی معلومات ہے، لیکن ٹک ٹاک صارفین کو دھوکہ دیتا ہے اور کہتاہے کہ جانکاری محفوظ ہے۔ روکیتا نے کہا، کمپنی صارفین کو اپنے مواد کی عمر کے مطابق ہونے اور صارفین پر جمع کیے گئے ڈیٹا کے خطرے کے بارے میں سچ نہیں بتاتی ہے۔ ٹک ٹاک ایک چینی کمپنی بائٹ ڈانس کی ملکیت ہے۔ کمپنی نے 2020 میں اپنا ہیڈکوارٹر سنگاپور منتقل کر دیا تھا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: