Choose Municipal Ward
    CLICK HERE FOR DETAILED RESULTS
    ہوم » نیوز » عالمی منظر

    امریکہ نے طالبان اور حقانی نیٹ ورک کے حامی چھ افراد کو قرار دیا عالمی دہشت گرد

    دہشت گردی کے خلاف اپنی مہم جاری رکھتے ہوئے ٹرمپ انتظامیہ نے چھ اشخاص کو عالمی دہشت گرد قراردیا ہے، جن کو افغانستان میں طالبان اور حقانی نیٹ ورک کی حمایت کرنے اور پاکستان میں دہشت گردوں سے وابستگی رکھنے کا مورد الزام ٹھہرایا گیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated: Jan 26, 2018 05:34 PM IST
    • Share this:
    • author image
      NEWS18-Urdu
    امریکہ نے طالبان اور حقانی نیٹ ورک کے حامی چھ افراد کو قرار دیا عالمی دہشت گرد
    علامتی تصویر

    واشنگٹن: دہشت گردی کے خلاف اپنی مہم جاری رکھتے ہوئے ٹرمپ انتظامیہ نے چھ اشخاص کو عالمی دہشت گرد قراردیا ہے، جن کو افغانستان میں طالبان اور حقانی نیٹ ورک کی حمایت کرنے اور پاکستان میں دہشت گردوں سے وابستگی رکھنے کا مورد الزام ٹھہرایا گیا ہے۔ عالمی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کئے گئے اشخاص میں افغانستان کی سابقہ طالبان حکومت کے سینئر لیڈران شامل ہیں، جن میں افغانستان کے سینٹرل بینک کے سابق گورنر عبدالصمد ثانی بھی شامل ہیں۔

    مذکورہ افراد پر افغانستان میں امریکی اتحادی افواج پر حملوں میں ملوث دہشت گردوں کو ہتھیار اور مالی تعاون فراہم کرنے کے الزامات ہیں۔ ٹریزری ڈپارٹمنٹ کے سینئر اہلکار سائگل منڈیکلر نے جمعرات کو بتایا کہ دہشت گردوں کو ممنوعہ فہرست میں شامل کرنے کی کارروائی صدر ڈونالڈٹرمپ کی جنوبی ایشیاء میں دہشت گردی مخالف پالیسی کے مطابق کی گئی ہے ۔ اس پالیسی کے تحت دہشت گرد تنظیموں کو کمزور کرنا اوران سے وابستگی رکھنے والے افراد کو عوام کے سامنے بے نقاب کرنا اصل حکمت عملی ہے۔

    دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کئے گئے افراد امریکہ میں جائداد حاصل نہیں کرسکیں گے اور امریکی شہریوں کو ان سے کوئی بھی معاملہ کرنا ممنوع ہوگا۔ امریکی پالیسی کا اصل مقصد افغانستان میں 17 سالہ جنگ کو ختم کرناہے۔ حالیہ عرصے میں افغان فوج کے لئے امریکی فوجی امداد میں اضافہ کیا گیا ہے اور امریکہ کے ساتھ تعاون کرنےکے لئے پاکستان پر دباؤ ڈالا جارہا ہے۔

    First published: Jan 26, 2018 05:34 PM IST
    corona virus btn
    corona virus btn
    Loading