ہوم » نیوز » عالمی منظر

شکست کے بعد اگر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاوس نہیں چھوڑا تو کیا ہو گا؟

ڈونلڈ ٹرمپ ابھی سے جس طرح کا رخ اپنا رہے ہیں اسے دیکھنے کے بعد لگ رہا ہے کہ وہ اس الیکشن میں ہار گئے تب بھی وہ وائٹ ہاوس کو اتنی آسانی سے نہیں چھوڑیں گے۔

  • Share this:
شکست کے بعد اگر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاوس نہیں چھوڑا تو کیا ہو گا؟
امریکی صدارتی الیکشن میں آمنے سامنے ہیں ٹرمپ اور بائیڈن

واشنگٹن۔ امریکہ کا صدارتی الیکشن دلچسپ موڑ پر پہنچ گیا ہے۔ ڈیموکریٹک امیدوار جو بائیڈن نے ریپبلیکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف مضبوط سبقت بنا لی ہے۔ اس بیچ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ الیکشن جیت رہے ہیں مگر ووٹوں کی گنتی میں دھوکہ دہی کو روکنے کے لئے وہ سپریم کورٹ جائیں گے۔ وہیں، دوسری طرف بائیڈن نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ الیکشن میں آسانی سے جیت حاصل کر لیں گے۔ ڈونلڈ ٹرمپ ابھی سے جس طرح کا رخ اپنا رہے ہیں اسے دیکھنے کے بعد لگ رہا ہے کہ وہ اس الیکشن میں ہار گئے تب بھی وہ وائٹ ہاوس کو اتنی آسانی سے نہیں چھوڑیں گے۔


امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس رخ کو دیکھنے کے بعد دنیا بھر میں اس بات کو لے کر چرچا زوروں پر ہے کہ اگر الیکشن میں ہار کے بعد بھی انہوں نے صدر کا عہدہ چھوڑنے سے انکار کر دیا تب کیا ہو گا۔ بتا دیں کہ اگر کوئی موجودہ صدر دوسری بار الیکشن میں کھڑا ہوتا ہے اور ہار جاتا ہے اور وہ وائٹ ہاوس سے نہیں نکلتا ہے تو اسے اقتدار سے ہٹانے کے لئے نو منتخب صدر اور سیکریٹ سروس کا رول اہم ہو جاتا ہے۔


بتا دیں کہ ہارنے والا صدر میعاد کار ختم ہونے کے بعد بھی اگر وائٹ ہاوس سے نکلنے کو تیار نہیں ہوتا ہے تو نومنتخب صدر کو ممکنہ طور پر اس شخص کو احاطے سے نکالنے کے لئے سیکریٹ سروس کو ہدایت دینے کا اختیار ہوتا ہے۔


امریکہ کے آئین میں نہیں ہے اس کا کوئی ذکر


یہاں پر غور کرنے والی بات یہ ہے کہ اگر کوئی صدر الیکشن ہارنے کے بعد اپنے عہدے سے ہٹنے کو تیار نہیں ہوتا ہے اور وائٹ ہاوس پر قبضہ جما کر رکھتا ہے تو ایسے صدر کے ساتھ کیا کیا جائے اس کے بارے میں امریکہ کے آئین میں کوئی بات نہیں کہی گئی ہے۔ انگریزی ویب سائٹ انڈیپنڈنٹ کے مطابق، امریکہ کے آئین میں اس بات کو کوئی ذکر نہیں ہے کہ اگر صدر اپنے عہدے سے ہٹنے کو تیار نہیں ہوتا تو اسے کیسے ہٹایا جا سکتا ہے۔

ٹرمپ نے ای میل اور ڈاک ووٹنگ پر جتایا شک


امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے رخ کو دیکھتے ہوئے جو بائیڈن نے ابھی سے وکیلوں اور آئینی قانون کے ماہرین کی صلاح لینا شروع کر دیا ہے۔ بائیڈن کو بھی اس بات کی خبر ہے کہ ٹرمپ نے جس طرح سے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے اس کے بعد انہیں تھوڑی پریشانی تو ہو گی ہی۔ بتا دیں کہ ٹرمپ نے ای میل کے ذریعہ ووٹنگ میں دھاندلی ہونے کا الزام لگایا ہے۔ ٹرمپ نے ای میل یا ڈاک کے ذریعہ ووٹنگ پر شک کا اظہار کیا ہے۔


Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 05, 2020 03:25 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading