ہوم » نیوز » عالمی منظر

US Election Results 2020 : بائیڈن کیلئے لکی ثابت ہوسکتا ہے جارجیا ، ٹرمپ سے نکلے آگے ، واضح اکثریت سے کچھ ہی دور

ڈیموکریٹک امیدوار جو بائیڈن کو جارجیا نے راحت دی ہے ۔ 16 الیکٹورل ووٹ والے جارجیا میں بائیڈن آگے چل رہے ہیں ۔ اگر وہ جارجیا جیت جاتے ہیں تو وہ اکثریت کیلئے مطلوبہ اعداد و شمار کے کافی نزدیک پہنچ جائیں گے ۔

  • Share this:
US Election Results 2020 : بائیڈن کیلئے لکی ثابت ہوسکتا ہے جارجیا ، ٹرمپ سے نکلے آگے ، واضح اکثریت سے کچھ ہی دور
بائیڈن کیلئے لکی ثابت ہوسکتا ہے جارجیا ، ٹرمپ سے نکلے آگے ، 270 کے ہندسہ سے کچھ ہی دور

ڈیموکریٹک امیدوار جو بائیڈن کو جارجیا نے راحت دی ہے ۔ 16 الیکٹورل ووٹ والے جارجیا میں بائیڈن آگے چل رہے ہیں ۔ اگر وہ جارجیا جیت جاتے ہیں تو وہ اکثریت کیلئے مطلوبہ اعداد و شمار کے کافی نزدیک پہنچ جائیں گے ۔ وہائٹ ہاوس پہنچنے کیلئے کسی کو بھی 538 الیکٹورل کالیج ووٹ میں سے 270 ووٹ حاصل کرنا ضروری ہے ۔ اگر بائیڈن جارجیا میں جیت حاصل کرلیتے ہیں اور پھر نیواڈا یا ایریزونا ( دونوں ریاستوں میں وہ آگے چل رہے ہیں ) میں کامیابی حاصل کرلیتے ہیں یا پینسلوینیا ( جہاں ووٹوں کی گنتی رفتہ رفتہ ٹرمپ کی جیت کی امید کو کم کررہی ہے ) تو بائیڈن امریکہ کے اگلے صدر بن جائیں گے ۔


اس سے پہلے بائیڈن نے ڈیلاویئر میں صحافیوں سے کہا کہ جس طرح کی چیزیں ہیں ، ان سے ہم بہت اچھا محسوس کررہے ہیں ۔ ہمیں کوئی شک نہیں ہے کہ گنتی پوری ہونے پر سینیٹر کملا ہیرس اور میں جیت حاصل کریں گے ۔ کملا ہیرس بھی اس دوران بائیڈن کے ساتھ موجود تھیں ۔ سابق نائب صدر بائیڈن نے لوگوں سے ووٹوں کی گنتی پوری ہونے تک صبر و تحمل بنائے رکھنے کی بھی اپیل کی ۔ انہوں نے کہا کہ میں لوگوں سے تحمل برتنے کی اپیل کرتا ہوں ۔ پروسیس جاری ہے ۔ ووٹوں کی گنتی پوری کی جارہی ہے ۔


ادھر امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ڈیموکریٹک پارٹی پر الیکشن میں دھوکہ دہی کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابی نتیجے کے سلسلے میں آخری فیصلہ سپریم کورٹ کر سکتا ہے ۔ ٹرمپ نے جمعرات کو وہائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا،’ہمارا ماننا ہے کہ ہم بہ آسانی الیکشن جیت جائیں گے۔ انتخابی نتیجے سے متعلق بہت سی عرضیاں دائر کی جائیں گی کیونکہ ہمارے پاس الیکشن میں دھاندلی کے کافی ثبوت ہیں ۔ شاید اس کا فیصلہ ملک کا سپریم کورٹ کر سکتا ہے‘۔


امریکی صدر نے ایک بار پھر الیکشن میں اپنی جیت کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا،’ اگردرست ووٹوں کی گنتی کی جاتی ہے تو میں آسانی کے ساتھ جیت جاؤں گا۔ ڈیموکریٹک پارٹی غیر قانونی ووٹوں کے ذریعے انتخابی نتائج کو اپنے حق میں کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ میں فیصلہ کن سمجھے جانے والی متعدد ریاستوں کو جیت چکا ہوں ۔ ہم نے ایک تاریخی فتح درج کی ہے‘۔

واضح رہے کہ امریکہ میں ہوئے صدارتی انتخابات کے لیے گنتی جاری ہےجس میں ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار جو بائیڈن اور نائب صدر کے لیے ہندوستانی نژاد ان کی ساتھی امیدوار کملا ہیرس جیت کی جانب بڑھتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔ اب تک ہوئی گنتی میں جو بائیڈن سخت مقابلے کے بعد مشی گن اور وسکانسن صوبوں میں جیت حاصل کرنے کے بعد 264 الیکٹورل ووٹ حاصل کرچکے ہیں۔ امریکہ کا اگلا صدر بننے کے لیے انہیں 270 کے جادوئی اعدادوشمار تک پہنچنے کے لیے اب محض چھ الیکٹورل ووٹ کی ضرورت ہے۔ فاکس نیوز کے مطابق جو بائیڈن کے پاس اس وقت 264 الیکٹورل کالج ووٹ ہیں۔ وہ مکمل اکثریت سے محض چھ قدم دور ہیں۔

یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔ 
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Nov 06, 2020 06:15 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading