உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    US-China Tensions:چین کی تشویش کے درمیان امریکہ-انڈونیشیا کی مشترکہ فوجی مشقیں شروع

    چین کے ساتھ کشیدہ حالات کے درمیان امریکہ۔انڈونیشیا کی مشترکہ فوجی مشقیں۔

    چین کے ساتھ کشیدہ حالات کے درمیان امریکہ۔انڈونیشیا کی مشترکہ فوجی مشقیں۔

    US-China Tensions: فلن اور انڈونیشیا کے فوجی سربراہ جنرل اندیکا پرکاسا نے جنوبی سماترا صوبے کے بٹوراجا میں مشترکہ مشقیں شروع کیں، جو 14 اگست تک جاری رہیں گی۔ اس میں بحری، بری اور فضائی افواج سبھی حصہ لے رہے ہیں۔

    • Share this:
      US-China Tensions:ہند بحرالکاہل کے علاقے میں چین کی بڑھتی ہوئی عسکری سرگرمیوں کے درمیان، امریکہ اور انڈونیشیا نے بدھ کو سماترا جزیرے میں سالانہ مشترکہ فوجی مشق کا آغاز کیاہے۔ یہ مشق باہمی تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کا اشارہ ہے۔ پہلی بار دیگر ممالک آسٹریلیا، جاپان اور سنگاپور نے بھی اس میں شرکت کی ہے۔

      جکارتہ میں امریکی سفارت خانے نے بتایا کہ اس مشق میں تمام ممالک کے 5000 سے زائد فوجی حصہ لے رہے ہیں۔ یہ فوجی مشق 2009 سے شروع ہوئی تھی۔ تب سے اب تک اس سال سب سے زیادہ جوان اس میں حصہ لے رہے ہیں۔

      مشق کا مقصد کسی بھی مہم کے دوران اور آزاد اور خودمختار ہند-بحرالکاہل کی حمایت میں باہمی تعاون، صلاحیت اور اعتماد کو مضبوط کرنا ہے۔ امریکی فوج پیسیفک کے کمانڈنگ جنرل چارلس فلن نے کہا کہ یہ امریکہ اور انڈونیشیا کی مصروفیت اور اس اہم خطے کی افواج کے درمیان بڑھتے ہوئے تعلقات کی علامت ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Saudi, UAE: سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو امریکہ 5 بلین ڈالر کے فروخت کرےگامیزائل سسٹم

      China and Taiwan: پیلوسی کے دورہ تائیوان پرکشیدگی کیوں؟ تائیوان کےساتھ تجارت پربھی پابندی؟

      یہ بھی پڑھیں:
      Ayman al-Zawahiri: امریکی حملے میں ایمن الظواہری کو کیسے کیا گیا ہلاک؟ جانیے تفصیل

      14 اگست تک چلے گی مشق
      فلن اور انڈونیشیا کے فوجی سربراہ جنرل اندیکا پرکاسا نے جنوبی سماترا صوبے کے بٹوراجا میں مشترکہ مشقیں شروع کیں، جو 14 اگست تک جاری رہیں گی۔ اس میں بحری، بری اور فضائی افواج سبھی حصہ لے رہے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: