உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان جانے سے پہلے دو بار سوچیں، امریکہ نے اپنے شہریوں کو کیا خبردار، کہا۔ وہاں دہشت گردی۔۔۔

    امریکہ نے اپنے شہریوں کو دہشت گردی اور مسلح تصادم کے خطرے کے پیش نظر لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے آس پاس کے علاقوں میں سفر نہ کرنے کا مشورہ بھی دیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaAmerica, PakistanAmerica, Pakistan
    • Share this:
      واشنگٹن۔ امریکہ نے اپنے شہریوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات کے پیش نظر پاکستان خصوصاً اس کے پریشان حال صوبوں کے اپنے سفری منصوبوں پر نظر ثانی کریں۔ امریکی محکمہ خارجہ نے جمعرات کو جاری کردہ ایک ٹریول ایڈوائزری میں اپنے شہریوں پر زور دیا کہ وہ دہشت گردی اور اغوا کے واقعات کی وجہ سے صوبہ خیبر پختونخواہ (کے پی کے) بشمول بلوچستان اور قبائلی علاقہ کے سابقہ ​​یونین ٹیریٹری (فاٹا) کا سفر نہ کریں۔

      امریکہ نے 'لیول 3' کی ایڈوائزری جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ 'دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے سبب اپنے دورہ پاکستان پر نظر ثانی کریں۔ کچھ علاقوں میں خطرہ بڑھ گیا ہے۔" 'لیول تھری' سفری وارننگ اس وقت جاری کی جاتی ہے جب طویل مدتی یا سنگین حالات جو مسافروں اور زائرین کو خطرے میں ڈالتے ہیں اور جب غیر ضروری سفر سے گریز کرنا ضروری سمجھا جاتا ہے۔

      خطرے میں انسانوں کی نوکری! یہان ریسٹورینٹ میں روبوٹ نے دکھایا کمائی بڑھانے والا کارنامہ

      امریکہ میں 4 ہندوستانیوں کے اغوا سے مچا ہنگامہ! والدین کے ساتھ 8 ماہ کی بچی بھی اغوا

      امریکہ نے اپنے شہریوں کو دہشت گردی اور مسلح تصادم کے خطرے کے پیش نظر لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے آس پاس کے علاقوں میں سفر نہ کرنے کا مشورہ بھی دیا ہے۔ ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ "دہشت گرد بہت کم یا بغیر کسی وارننگ کے حملہ کر سکتے ہیں۔" وہ نقل و حمل کے مراکز، بازاروں، شاپنگ مالز، فوجی اداروں، ہوائی اڈوں، یونیورسٹیوں، سیاحتی مقامات، اسکولوں، اسپتالوں، عبادت گاہوں اور سرکاری سہولیات کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔ دہشت گرد اس سے پہلے امریکی سفارت کاروں اور سفارتی اداروں پر حملے کر چکے ہیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: