ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکہ کا 11 ممالک سے پناہ گزینوں کی آمد پر پابندی ہٹانے کا اعلان

امریکہ نے"زیادہ خطرے"والے11 ممالک میں پناہ گزینوں پر پابندی ہٹانے کا اعلان کیا ہے۔جس کے ساتھ زیادہ خطرہ ہے، تاہم امریکہ میں داخلہ چاہنے والے پناہ گزینوں کو پہلے کی بانسبت زیادہ سخت جانچ سے گزرناہوگا۔ان 11 ممالک میں پناہ گزینوں کے نام نہیں بتائے گئے ہیں۔ لیکن مانا جا رہا ہے کہ نارتھ کوریا اور 10 مسلم اکثریتی ممالک کے پناہ گزینوں سے یہ پابندی ہٹائی گئی ہے۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
امریکہ کا 11 ممالک سے پناہ گزینوں کی آمد پر پابندی ہٹانے کا اعلان
امریکہ کی ہوم لینڈ سکیورٹی منسٹر كرسٹجین نیلسن نے کیا اعلان

واشنگٹن۔ امریکہ نے 11 ممالک سے پناہ گرینوں کی آمد پر پابندی ہٹانے کا اعلان کردیا ہے۔غیرملکی خبرایجنسی کے مطابق 11 ممالک سے پناہ گزینوں کی امریکہ آمد پر پابندی ہٹائی جائے گی تاہم انہیں پہلے کی نسبت زیادہ سخت قوانین سے گزرنا ہوگا۔ امریکی حکام نے ان ممالک کے نام نہیں بتائےتاہم ممکنہ طور پر ان میں 10 مسلم اکثریتی ممالک اور شمالی کوریا شامل ہیں۔ امریکی ہوم لینڈ سیکورٹی کے سیکریٹری نیسلن کا کہنا تھا کہ ہمارے لیے یہ جاننا ضروری ہے کہ کون امریکہ میں داخل ہورہا ہے،اضافی سیکورٹی اقدامات برےعزائم رکھنے والوں کو پناہ گزین پروگرام کےغلط استعمال سےروکیں گے۔


امریکہ کی ہوم لینڈ سکیورٹی منسٹر كرسٹجین نیلسن نے بتایا، "یہ انتہائی ضروری ہے کہ ہمیں یہ معلوم ہوکہ کون امریکہ میں داخل ہو رہاہے"۔انہوں نے کہا، "ان اضافی حفاظتی اقدامات کی وجہ سے غلط لوگوں کے لئے ہمارے پناہ گزین پروگرام کا فائدہ اٹھانا مشکل ہوگا۔حفاظتی اقدامات یقینی بنائیں گے تاکہ ہم ملک کے لئے زیادہ محتاط نظریہ اپنائیں۔


واضح ہو کہ ان 11 ممالک پر ٹرمپ انتظامیہ نے اکتوبر میں پناہ گزین پالیسی کا جائزہ لینے کے بعد پابندی عائد کی تھی۔ حالانکہ سرکاری طور پر پہچان نہیں بتائی گئی تھی۔حالانکہ پناہ گزین کے گروہوں کا کہنا ہے کہ ان ممالک میں مصر، ایران، عراق، لیبیا، مالی، شمالی کوریا، صومالیا، جنوبی سوڈان، سوڈان، شام اور یمن شامل ہیں۔


بتادیں کہ نام نہیں جاری کرنے کی شرط پر ایک سینئر انتظامی افسر نے بتایا کہ 11 ممالک کیلئے بڑھائے گئے سکیورٹی چیک کی پالیسی مسلمانوں کو ہدف کرکے نہیں بنائی گئی تھی۔سرکاری افسر نے کہا کہ ان کے انتظامیہ کا مذہب سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔


نیوز ایجنسی یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ

First published: Jan 30, 2018 03:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading