ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکی صدر ٹرمپ کا افغانستان کا غیر اعلانیہ دورہ ، صدر اشرف غنی سے کی ملاقات ، طالبان سے مذاکرات پر کہی یہ بات

میٹنگ کے بعد دونوں ملکوں کے صدور نے امریکی فوجیوں سے ملاقات کی اور اس دوران تقریریں بھی کیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 29, 2019 10:59 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
امریکی صدر ٹرمپ کا افغانستان کا غیر اعلانیہ دورہ ، صدر اشرف غنی سے کی ملاقات ، طالبان سے مذاکرات پر کہی یہ بات
امریکی صدر ٹرمپ کا افغانستان کا غیر اعلانیہ دورہ ، صدر اشرف غنی سے کی ملاقات

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے افغانستان کے غیر اعلانیہ دورے کےدوران صدر محمد اشرف غنی سے ملاقات کی اور یہاں تعینات امریکی فوجیوں سے بھی ملے ۔ صدر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد ٹرمپ کا یہ پہلا افغانستان دورہ ہے ۔ اشرف غنی نے جمعہ کی صبح ٹویٹ کیا کہ یہ ہماری دوطرفہ ملاقات تھی ۔ ہم نے مشرقی افغانستان میں داعش کے خاتمہ سمیت جنگ کے میدان میں اپنی مشترکہ فوجی کوششوں کے تحت ہوئی اہم پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔ ڈونالڈ ٹرمپ نے اس لڑائی میں افغانستان کے سلامتی دستوں کی کوششوں کوبھی سراہا۔

خیال رہے کہ ٹرمپ جمعرات شام یہاں پہنچے تھے ۔ کابل سے 50 کلومیٹر دور امریکی اور دونوں ملکوں کے مشترکہ فوجی اڈے بگرام ایئر بیس پر میٹنگ کے دوران دونوں فریقوں نے اس بات پر زوردیاکہ اگر طالبان امن معاہدے تک پہنچنے کےلیے اپنے عزم کے تئیں ایماندار ہیں تو انھیں جنگ بندی تسلیم کرنی چاہیے ۔

صدر ٹرمپ نے مسٹر غنی سے کہا کہ طالبان کوئی معاہدہ کرنا چاہتا ہےاور اسی وجہ سے ہم نے ان کے ساتھ ایک میٹنگ کی اور کہا کہ یہ جنگ بندی کے ذریعے ہی ممکن ہے۔ لیکن پہلے وہ ایسا نہیں چاہتے تھے ، حالانکہ اب طالبان جنگ بندی چاہتے ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ اس سے معاملہ حل ہوجائے گا۔ انہوں نے بھی اس بات کی تصدیق کی کہ امریکہ یہاں تعینات فوجیوں کی تعداد گھٹا کر 8600 کر دے گا۔ ایک اندازے کے مطابق اس وقت افغانستان میں 14000 سے بھی کم امریکی فوجی تعینات ہیں ، لیکن صحیح تعداد نہیں بتائی گئی ہے۔  انہوں نے کہا ، ’’ہم نے بہت سی کامیابی حاصل کی ہے اور اب وقت آگیا ہے کہ ہم اپنے فوجیوں کو یہاں سے کم کریں۔‘‘

میٹنگ کے بعد دونوں ملکوں کے صدور نے امریکی فوجیوں سے ملاقات کی اور اس دوران تقریریں بھی کیں۔  مسٹر غنی نے کہا کہ دہشت گردی کامقابلہ کرنے میں مسلسل کوششوں اور قربانیوں کے لیے ہم آپکا شکریہ اداکرتے ہیں ۔
First published: Nov 29, 2019 10:59 PM IST