உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ukraine-Russia War: اقتصادی چوٹ کے ذریعہ روس کو کمزور کرے گا امریکہ، بائیڈن نے کہا : پوتن نے دنیا کو دھوکہ دیا

    Ukraine-Russia War: اقتصادی چوٹ کے ذریعہ روس کو کمزور کرے گا امریکہ، بائیڈن نے کہا : پوتن نے دنیا کو دھوکہ دیا  ۔ تصویر : اے این آئی ۔

    Ukraine-Russia War: اقتصادی چوٹ کے ذریعہ روس کو کمزور کرے گا امریکہ، بائیڈن نے کہا : پوتن نے دنیا کو دھوکہ دیا ۔ تصویر : اے این آئی ۔

    Russia-Ukraine War: امریکی صدر جو بائیڈن نے جمعرات کو کہا کہ روس کے صدر پوتن نے اس جنگ کو منتخب کیا ہے اور اب وہ اس کا نتیجہ بھگتیں گے ۔ ہم جی سیون ممالک مل کر روس کو جواب دیں گے ۔ یو ٹی بی سمیت روس کے چار بینکوں پر پابندیاں لگائی جائیں گی ۔

    • Share this:
      Ukraine-Russia War: امریکی صدر جو بائیڈن نے جمعرات کو کہا کہ یوکرین پر روس کے حملے کی روس کو سنگین قیمت چکانی پڑے گی۔ روس کا ہر دعویٰ جھوٹا ہے۔ بائیڈن نے کہا کہ ہم چار بڑے روسی بینکوں پر پابندیاں لگانے جا رہے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ روس اب امریکہ سے زیادہ پیسے نہیں کما سکے گا۔ جو بائیڈن نے کہا کہ روس یوکرین پر قبضہ کرنا چاہتا ہے ۔ دنیا کے زیادہ تر حصے روس کے خلاف ہیں ۔ جی سیون ممالک اس کا منہ توڑ جواب دیں گے ۔ آج ہم روس پر اور بھی سخت پابندیاں لگا رہے ہیں ۔

      امریکی صدر نے کہا کہ ہم روس کو اقتصادی طور پر چوٹ پہنچائیں گے ۔ اس کے بینکوں پر پابندیاں لگائی جائیں گی ۔ یہ روس پر سب سے بڑی اقتصادی چوٹ ہوگی ۔ ناٹو ممالک کی کل میٹنگ ہوگی ۔ اس کے بدعنوان ارب پتیوں پر بھی سخت پابندیاں لگائی جائیں گی ۔


      انہوں نے کہا کہ روس کے صدر پوتن نے اس جنگ کو منتخب کیا ہے اور اب وہ اس کا نتیجہ بھگتیں گے ۔ ہم جی سیون ممالک مل کر روس کو جواب دیں گے ۔ یو ٹی بی سمیت روس کے چار بینکوں پر پابندیاں لگائی جائیں گی ۔

      امریکی صدر نے کہا کہ یہ ہم سب کیلئے ایک خطرناک وقت ہے ۔ ایکسپورٹ کنٹرول روس کے ہائی ٹیک درآمدات کے آدھے سے زیادہ کو بند کیا جائے گا ۔ ہم روس کے سائبر حملے کا جواب دینے کیلئے تیار ہیں ۔

      امریکہ کے صدر نے مزید کہا کہ روس کے صدر پوتن سے بات کرنے کا میرا کوئی ارادہ نہیں ہے۔ وہ سابق سوویت یونین کو دوبارہ قائم کرنے چاہتے ہیں ۔ میرے خیال میں ان کی خواہش اس کے بالکل برعکس ہے جہاں اس وقت ہم ہیں۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: