اپنا ضلع منتخب کریں۔

    امریکی سینیٹرز نے کہا-مسک نے ٹویٹر کی صداقت کا اندازہ کم لگایا، عدم اعتماد کی تحقیقات پر دیازور

    ایلون مسک فائل فوٹو

    ایلون مسک فائل فوٹو

    امریکی ارکان پارلیمنٹ نے دعویٰ کیا ہے کہ ٹوئٹر کے نئے سی ای او ایلون مسک نے خطرناک قدم اٹھائے ہیں، جس نے اس سوشل میڈیا پلیٹ فارم کی صداقت اور سیکورٹی کو کمزور کردیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Newyork
    • Share this:
      امریکی سینیٹرز کے ایک گروپ نے ایلون مسک کی جانب سے ٹوئٹر میں کی گئی تبدیلیوں کو لے کر تشویش ظاہر کی ہے۔ اس سلسلے میں، سینیٹرز نے ملک کے عدم اعتماد کے ریگولیٹر سے کہا ہے کہ وہ سوشل میڈیا پلیٹ فارم ٹویٹر کے ذریعے رضامندی کے احکامات اور صارفین کی رازداری کے قوانین کی تعمیل کی نگرانی کرے۔

      اس ضمن میں فیڈرل ٹریڈ کمیشن (پی ٹی سی) کی چیئرپرسن لینا خان کو خط لکھا گیا ہے۔ جس میں رچرڈ بلومینتھل اور الزبتھ وارن سمیت سات ڈیموکریٹک سینیٹرز نے دستخط کیے ہیں۔ خط میں کہا گیا ہے کہ ہم آپ کو ٹویٹر کی جانب سے اپنے صارفین اور فیڈرل ٹریڈ کمیشن کی تحفظ کے لیے سنگین اور جان بوجھ کر نظر انداز کیے جانے سے آگاہ کرتے ہیں۔ ہم آپ کو ٹویٹر کے رضامندی کے احکامات یا ہمارے صارفین کے تحفظ کے قوانین کے تحت کسی بھی خلاف ورزی کی تحقیقات کرنے کی ترغیب دیتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      سعودی عرب جانے والے ہندوستانیوں کیلئے خوشخبری، ویزا کیلئے اب نہیں دینا ہوگا یہ سرٹیفکیٹ

      یہ بھی پڑھیں:
      چین میں لاک ڈاون کی ظالمانہ پالیسی کے خلاف سڑکوں پر ’بغاوت‘

      امریکی ارکان پارلیمنٹ نے دعویٰ کیا ہے کہ ٹوئٹر کے نئے سی ای او ایلون مسک نے خطرناک قدم اٹھائے ہیں، جس نے اس سوشل میڈیا پلیٹ فارم کی صداقت اور سیکورٹی کو کمزور کردیا ہے۔ خط میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ’حال کے ہفتوں میں ٹوئٹر کے نئے مالک ایلون مسک نے خطرناک قدم اٹھائے ہیں، جس نے اس پلیٹ فارم کی صداقت اور سیکورٹی کو کم کردیا ہے۔ ساتھ ہی اس بات کی واضح وارننگ دی گئی تھی کہ ان تبدیلیوں کا غلط استعمال دھوکہ دہی، گھوٹالے اور خطرناک نقالی کے لیے کیا جائے گا۔ اس کے باوجود مسک نے نئی سہولیات کا اعلان کیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: