உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Omicron: ویتنام میں یکم جنوری سے بین الاقوامی پروازیں دوبارہ شروع، غیرخطرےوالےممالک ہی میں سفرکی اجازت

    آر ٹی پی سی آر ٹسٹ کی قیمتیں پرائیوٹ اور سرکاری ایئرپورٹس پر الگ الگ ہیں۔

    آر ٹی پی سی آر ٹسٹ کی قیمتیں پرائیوٹ اور سرکاری ایئرپورٹس پر الگ الگ ہیں۔

    نائب وزیر اعظم فام بن منہ نے حکومتی ہدایت نامہ میں کہا کہ یہ اقدام بین الاقوامی مسافروں کی نقل و حمل کو بحال کرنا، اقتصادی اور سیاحت کی بحالی کو تیز کرنا اور بیرون ملک مقیم ویتنامیوں کو آنے والے قمری نئے سال کے لیے اپنے وطن واپس جانے کے قابل بنانا ہے۔

    • Share this:
      ویتنام کی حکومت نے یکم جنوری 2022 سے ویتنام اور دیگر ممالک کے درمیان باقاعدہ تجارتی پروازیں دوبارہ شروع کرنے کی منظوری دے دی ہے، لیکن یہ صرف وہ ممالک ہوں گے، جو کووڈ 19 سے انتہائی محفوظ ہیں۔ ژنہوا نیوز ایجنسی کے مطابق حکومت کے تازہ ترین نوٹس میں بتایا گیا ہے کہ ان ممالک میں چین، جاپان، جنوبی کوریا، تھائی لینڈ، سنگاپور، لاؤس، کمبوڈیا اور امریکہ شامل ہیں۔

      نائب وزیر اعظم فام بن منہ نے حکومتی ہدایت نامہ میں کہا کہ یہ اقدام بین الاقوامی مسافروں کی نقل و حمل کو بحال کرنا، اقتصادی اور سیاحت کی بحالی کو تیز کرنا اور بیرون ملک مقیم ویتنامیوں کو آنے والے قمری نئے سال کے لیے اپنے وطن واپس جانے کے قابل بنانا ہے۔

      من نے کہا کہ بین الاقوامی پروازوں کا دوبارہ آغاز ضروری ہے، وبائی امراض کے موثر کنٹرول کو بھی یقینی بنایا جانا چاہیے، من نے متعلقہ حکام اور ہوا بازی کے کاروبار پر زور دیا کہ وہ منظور شدہ منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے لیے فعال طور پر کام کریں اور اصل صورتحال کے مطابق ایڈجسٹمنٹ کے لیے سفارشات دیں۔

      کووڈ 19 وبا کی وجہ سے ملک نے اپنی سرحد بند کردی اور تمام بین الاقوامی پروازوں کو گذشتہ سال مارچ میں گراؤنڈ کردیا ، صرف ویتنامی وطن واپس آنے والوں ، غیر ملکی ماہرین اور اعلیٰ ہنر مند کارکنوں کو کچھ قرنطینہ کی ضروریات کے ساتھ داخلے کی اجازت دی گئی۔

      ڈی جی سی اے نے اعلان کیا ہے کہ اومی کرون کے نئے ویرینٹ کے بڑھتے ہوئے خوف کے درمیان ہندوستان سے تجارتی بین الاقوامی پروازیں 31 جنوری کو دوبارہ شروع کیا جاسکتا ہے۔ اس سے پہلے ڈی جی سی اے نے اعلان کیا تھا کہ طے شدہ پرواز 15 دسمبر سے دوبارہ شروع ہو جائے گی۔ اس حکم پر اس وقت نظر ثانی کی گئی جب نئے ویرینٹ کی وجہ سے ایک اور لہر پر تشویش ظاہر کی گئی۔

      ڈی جی سی اے نے یہ بھی اعلان کیا تھا کہ اس حکم سے موجودہ پروازوں پر کوئی اثر نہیں پڑے گا جو چل رہی ہیں کیونکہ یہ صرف مکمل طور پر دوبارہ شروع ہونے کے لیے ہے جسے اب ملتوی کر دیا گیا ہے۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: