உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایئرپورٹ پر فلائٹ پکڑنے بکنی میں پہنچی خاتون ، پھر ہوا کچھ ایسا ، جان کر رہ جائیں گے حیران

    ایئرپورٹ پر فلائٹ پکڑنے بکنی میں پہنچی خاتون ، پھر ہوا کچھ ایسا ، جان کر رہ جائیں گے حیران ۔ تصویر : Instagram/@humansofspiritairlines

    ایئرپورٹ پر فلائٹ پکڑنے بکنی میں پہنچی خاتون ، پھر ہوا کچھ ایسا ، جان کر رہ جائیں گے حیران ۔ تصویر : Instagram/@humansofspiritairlines

    ویڈیو پر لوگ کافی دلچسپ کمنٹس بھی کررہے ہیں ۔ ایک شخص نے لکھا : کم سے کم لڑکی نے ماسک پہنا ہے ۔ وہیں دوسرے نے کہا : اس سے پہلے ایسا کبھی نہیں ہوا کہ میں کسی فلائٹ پر بیٹھنے کیلئے اتنا پرجوش ہوا ہوں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      سوشل میڈیا بڑی ہی عجیب و غریب جگہ ہے ۔ یہاں اکثر ایسی ایسی چیزیں موضوع بحث بن جاتی ہیں ، جو کافی عجیب و غریب ہوتی ہیں ۔ انسانوں اور جانوروں سے وابستہ کئی تصاویر اور ویڈیوز کافی وائرل ہوتے رہتے ہیں ۔ حال ہی میں سوشل میڈیا پر ایک اور عجیب و غریب چیز وائرل ہورہی ہے ۔ کسی ایئرپورٹ پر ایک خاتون اپنی فلائٹ پکڑنے کیلئے جاتی نظر آئی ۔ اب آپ کہیں گے کہ اس میں عجیب و غریب کیا ہے تو آپ کو بتادیں کہ خاتون صرف بکنی اور ماسک پہنے فلائٹ پکڑنے آئی تھی ۔

      دراصل انسٹاگرام پر ایک اکاونٹ ہیومنس آف ایئرلائنس نام سے ہے ۔ اس اکاونٹ پر ایئرپورٹ اور فلائٹس سے وابستہ وائرل ویڈیوز ، تصاویر اور میمس شیئر کئے جاتے ہیں ۔ حال ہی میں اس اکاونٹ نے ایک عجیب و غریب ویڈیو شیئر کیا ہے ۔ اس ویڈیو میں ایک لڑکی ایئرپورٹ کے اندر اپنی فلائٹ پکڑنے جاتی نظر آرہی ہیں ۔

      لڑکی بیگیج کاونٹر کے نزدیک سے جاتی نظر آتی ہے ، جب اس کا کوئی ویڈیو بنالیتا ہے ۔ لڑکی نے صرف ایک گرین بکنی پہنی ہوئی ہے اور چہرے پر ماسک لگایا ہوا ہے ۔ وہاں موجود لوگ اس منظر کو دیکھ کر حیران نظر آرہے ہیں ۔ ہر کوئی مڑ مڑ کر ایک مرتبہ لڑکی کو ضرور دیکھ رہا ہے ۔



      ویڈیو پر لوگ کافی دلچسپ کمنٹس بھی کررہے ہیں ۔ ایک شخص نے لکھا : کم سے کم لڑکی نے ماسک پہنا ہے ۔ وہیں دوسرے نے کہا : اس سے پہلے ایسا کبھی نہیں ہوا کہ میں کسی فلائٹ پر بیٹھنے کیلئے اتنا پرجوش ہوا ہوں ۔ ایک یوزر نے تو مزاحیہ انداز میں کہا کہ سیکورٹی گیٹ پر خاتون کی چیکنگ کرنی آسان ہوگی ۔ کسی نے کہا کہ کم سامان کے ساتھ سفر کرنے سے ماحولیات محفوط رہتا ہے جبکہ کچھ لوگ خاتون کی تنقید کررہے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: