உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ukraine-Russia War: کیاروس۔ یوکرین جنگ سے ہندوستان کوہوناچاہیےپریشان؟ کیاکہتےہیں ماہرین

    Ukraine-Russia Crisis: بڑھتی کشیدگی کے درمیان روس کے فیصلے سے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوجائیں گے یوروپی ممالک۔

    Ukraine-Russia Crisis: بڑھتی کشیدگی کے درمیان روس کے فیصلے سے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوجائیں گے یوروپی ممالک۔

    اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندے ٹی ایس ترومورتی (TS Tirumurti) نے کہا تھا کہ ہم افسوس کے ساتھ نوٹ کرتے ہیں کہ بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ کشیدگی کو کم کرنے کے لیے فریقین کی طرف سے کیے گئے حالیہ اقدامات پر توجہ نہیں دی گئی۔ صورتحال ایک بڑے بحران کی طرف بڑھنے کا خطرہ ہے۔

    • Share this:
      جمعرات کو روسی صدر ولادیمیر پوتن (Vladimir Putin) کے یوکرین میں خصوصی فوجی آپریشن کا اعلان کرنے کے بعد ہندوستان کو ایک نئی صورت حال کا سامنا کرنا پڑرہا ہے لیکن ہندوستان روس اور امریکہ دونوں کے ساتھ سازگار تعلقات برقرار رکھے ہوئے ہے کیونکہ اس نے گزشتہ ماہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UNSC) میں طریقہ کار کے ووٹ سے پرہیز کیا تھا۔ امریکہ-روس سے تعلقات کے موجودہ تناؤ پر ہندوستان کا موقف اس کی شاندار ’اسٹریٹیجک خود مختاری‘ کی یاد دلاتا ہے۔

      ہندوستان نے فوری طور پر کشیدگی کم کرنے اور مزید کسی ایسی کارروائی سے گریز کرنے کا مطالبہ کیا ہے جو حالات کو مزید خراب کرنے میں معاون ثابت ہو۔ اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندے ٹی ایس ترومورتی (TS Tirumurti) نے کہا تھا کہ ہم افسوس کے ساتھ نوٹ کرتے ہیں کہ بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ کشیدگی کو کم کرنے کے لیے فریقین کی طرف سے کیے گئے حالیہ اقدامات پر توجہ نہیں دی گئی۔ صورتحال ایک بڑے بحران کی طرف بڑھنے کا خطرہ ہے۔ ہم اس پیش رفت پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہیں، جنہیں اگر احتیاط سے نہ سنبھالا گیا تو وہ خطے کے امن و سلامتی کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق قومی سلامتی کونسل آج یوکرین کے بحران پر مندرجہ ذیل امور کے پیش نظر بحث کررہی ہے۔

      ایس 400 کی ترسیل اور امریکی چھوٹ:

      یوکرین کا بحران ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب روس نے ہندوستان کو S-400 ایئر ڈیفنس سسٹم کی فراہمی شروع کی تھی، جس سے امریکہ کی چھوٹ ملنے کی امید ہے۔ اس پر پابندیاں ذرائع کا کہنا ہے کہ روس اور یوکرین کے درمیان جاری تنازعہ میزائل سسٹم کی فراہمی اور صدارتی چھوٹ کے امکان دونوں کو پیچیدہ بنا دے گا۔


      تشویش کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ امریکہ چاہتا ہے کہ ہمارے تمام اتحادی، شراکت دار روس کے ساتھ ایسے لین دین کو ترک کر دیں جس سے Countering America's Adversaries Through Sanctions Act (CAATSA) کے تحت پابندیاں لگنے کا خطرہ ہو۔ CAATSA ایک سخت امریکی قانون ہے جو انتظامیہ کو ان ممالک پر پابندیاں لگانے کا اختیار دیتا ہے جو روس سے 2014 میں کریمیا کے الحاق اور 2016 کے امریکی صدارتی انتخابات میں اس کی مبینہ مداخلت کے جواب میں روس سے بڑے دفاعی ہارڈ ویئر خریدتے ہیں۔

      یہ بحران روس اور چین کو قریب لا سکتا ہے؟

      جاری تنازعہ ماسکو کو چین جیسے دوستوں پر زیادہ انحصار کرے گا اور ایک ایسا علاقائی بلاک بنائے گا جس کا ہندوستان حصہ نہیں ہے۔ دنیا نے دیکھا ہے کہ کس طرح روس، چین اور پاکستان نے طالبان کی حکومت والے ملک میں اپنے باہمی سٹریٹجک مفادات کی وجہ سے افغانستان کے بحران کے دوران ایک جیسے موقف اختیار کیے تھے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: