உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ukraine-Russia War: یوکرینی شہری نے کیا اس طرح جرات و ہمت کا مظاہرہ، ویڈیو وائرل

    انوکھا منظر

    انوکھا منظر

    ماسکو نے کہا کہ اس نے فوجی اہداف پر کروز میزائل فائر کیے، یوکرین پر مذاکرات کو مسترد کرنے کا الزام لگانے کے بعد جارحانہ کارروائی جاری رکھی لیکن روس کے حملے کے تیسرے دن یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ان کا ملک کبھی بھی کریملن کے سامنے نہیں جھکائے گا کیونکہ واشنگٹن نے کہا کہ حملہ آور قوت میں رفتار کی کمی ہے۔

    • Share this:
      ایک طاقتور سوشل میڈیا ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ یوکرین کا ایک شہری روسی ٹینک کو اپنے وزن سے روکنے کی کوشش کر رہا ہے۔ آدمی ٹینک پر چڑھتا ہے، پھر نیچے کودتا ہے اور اسے بازوؤں سے پیچھے دھکیلنے کی کوشش کرتا ہے۔ جب وہ ناکام ہو جاتا ہے، تو وہ ٹینک کے سامنے گھٹنے ٹیک کر اس کی پیش رفت کو روکنے کی مایوس کن کوشش کرتا ہے۔

      یہ واقعہ شمالی یوکرین (northern Ukraine) کے باخماچ (Bakhmach) نامی علاقہ میں ویڈیو پر ریکارڈ کیا گیا۔ یہ غیر مسلح یوکرینی باشندوں کی طرف سے روسی فوجیوں کا مقابلہ کا ایک مظاہرہ ہے۔ جس کا نظارہ ہزاروں سوشل میڈیا صارفین نے دنیا بھر سے دیکھا ہے اور اپنے انداز میں اظہار خیال کیا ہے۔
      یوکرین میں شہریوں کی ہلاکتوں کی اطلاعات میں اضافہ ہو رہا ہے۔ سی این این کی خبر کے مطابق ایک مقامی اسپتال کے مطابق ہفتے کی شام یوکرین کے دارالحکومت کیف کے ایک مغربی ضلع میں شدید فائرنگ کے نتیجے میں ایک چھ سالہ لڑکا ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔ کیف کے اوخمتدیت اسپتال (Okhmatdyt hospital) کے ایک ڈاکٹر سرہی چرنیسک کے مطابق دو نوعمر اور تین بالغ افراد زخمی ہونے والوں میں شامل ہیں۔

      اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اس نے جمعرات کو روس کے حملے کے بعد سے شروع ہونے والی یوکرین میں لڑائی میں کم از کم 240 شہریوں کی ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے، جن میں کم از کم 64 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اس کے برعکس حقیقی اعداد و شمار کافی زیادہ ہیں، کیونکہ ہلاکتوں کی بہت سی رپورٹیں باقی ہیں، جس کی تصدیق کرنی باقی ہے۔

      اقوام متحدہ کے دفتر برائے رابطہ برائے انسانی امور (U.N. Office for the Coordination of Humanitarian Affairs) نے ہفتہ کے آخر میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے دفتر سے گنتی جاری کی، جس میں تنازعات سے ہونے والی ہلاکتوں کے بارے میں سخت طریقہ کار اور تصدیقی طریقہ کار موجود ہے۔

      اقوام متحدہ کے دفتر برائے رابطہ برائے انسانی امور (OCHA) نے یہ بھی کہا کہ شہری بنیادی ڈھانچے کو پہنچنے والے نقصان نے لاکھوں لوگوں کو بجلی یا پانی تک رسائی سے محروم کر دیا ہے اور یوکرین میں (زیادہ تر شمالی، مشرقی اور جنوبی یوکرین میں) انسانی جانوں کو سخت نقصان پہنچ رہا ہے۔ جس کی کوئی نظیر نہیں ہے۔

      دریں اثنا ماسکو نے اپنے فوجیوں کو یوکرین میں ہر طرف سے پیش قدمی کا حکم دیا جب کہ مغرب نے ہفتے کے آخر میں پابندیوں کے ساتھ جواب دیا جس نے روس کے بینکنگ سیکٹر کو تباہ کرنے کی کوشش کی۔یوکرین کے حکام نے بتایا کہ جمعرات کو روس کے حملے کے بعد سے 198 شہری ہلاک ہو چکے ہیں، جن میں تین بچے بھی شامل ہیں، اور انہوں نے متنبہ کیا کہ روسی تخریب کار کیف میں سرگرم ہیں جہاں دھماکوں نے رہائشیوں کو زیر زمین بھاگنے پر مجبور کیا۔

      ماسکو نے کہا کہ اس نے فوجی اہداف پر کروز میزائل فائر کیے، یوکرین پر مذاکرات کو مسترد کرنے کا الزام لگانے کے بعد جارحانہ کارروائی جاری رکھی لیکن روس کے حملے کے تیسرے دن یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ان کا ملک کبھی بھی کریملن کے سامنے نہیں جھکائے گا کیونکہ واشنگٹن نے کہا کہ حملہ آور قوت میں رفتار کی کمی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: