ہوم » نیوز » عالمی منظر

چین میں بچہ پیدا کرتے ہی گربھ نال کھا جاتی ہے ماں، بچے کی ناف سے نوچ کر پکا لیتی ہیں سوپ

دراصل چین میں اسے پلیسینٹو فیگی (Placentophagy or Placentophagia) کہا جاتا ہے۔ آپ کو بتادیں کہ وہاں کے لوگوں کا یہ ماننا ہے کہ پلیسینٹا میں بہت سارے غذائی اجزاء ہوتے ہیں جس کی وجہ سے وہ اسے کھاتے ہیں۔

  • Share this:
چین میں بچہ پیدا کرتے ہی گربھ نال کھا جاتی ہے ماں، بچے کی ناف سے نوچ کر پکا لیتی ہیں سوپ
دراصل چین میں اسے پلیسینٹو فیگی (Placentophagy or Placentophagia) کہا جاتا ہے۔ آپ کو بتادیں کہ وہاں کے لوگوں کا یہ ماننا ہے کہ پلیسینٹا میں بہت سارے غذائی اجزاء ہوتے ہیں جس کی وجہ سے وہ اسے کھاتے ہیں۔

چین (China کے کھان پان سے تو ہر کوئی واقف ہے۔ کتے کے مانس سے لیکر زندہ جانور، چین میں لوگ سب کچھ کھا لیتے ہیں لیکن کیا آپ کو وہان کی ایک عجیب و غریب روایت (Weird Culture) کے بارے میں پتہ ہے جس میں بچے کے جنم کے بعد لوگ ماں کی گربھ نال(Placenta eating) ہی کھا جاتے ہیں۔

دراصل چین میں اسے پلیسینٹو فیگی (Placentophagy or Placentophagia) کہا جاتا ہے۔ آپ کو بتادیں کہ وہاں کے لوگوں کا یہ ماننا ہے کہ پلیسینٹا میں بہت سارے غذائی اجزاء ہوتے ہیں جس کی وجہ سے وہ اسے کھاتے ہیں۔ آپ کو جانکاری دے دیں کہ چین میں ماں بچے کو پیدا کرنے کے بود خود ہی اپنی گربھ نال کو کھا جاتی ہے۔ یہ نہیں کئی بار اسپتال سے اس کی چوری بھی ہو جاتی ہے جو کہ باہر لے جاجر اونچی قیمت بیچی جاتی ہے۔ آپ کو یہ جان کر بھی حیرت ہوگی کہ اس ملک میں پلیسینٹا کو دواؤں کی طرح بھاری قیمت پر بیچا جاتا ہے۔ ساتھ ہی اسے سکھانے کے بعد دواؤ کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا ہے اور کئی لوگ تو اس کا سوپ بناکر بھی پیے ہیں۔


چین میں سالوں سے کھا رہے ہیں پلیسینٹا

اطلاع کے مطابق چین میں رہنے والے لوگوں کا ماننا ہے کہ پلیسینٹا کھانے سے خواتین کو بچہ پیدا کرنے کے بعد تناؤ محسوس نہیں ہوتا۔ ساتھ ہی یہ انہیں جوان دکھانے میں کارگر ہے۔ وہیں یہ بھی کہا جاتا ہے کہ مرودں کیلئے یہ نامردی کا علاج ہے۔ آپ کو یہ بھی بتادیں کہ جانکاری کے مطابق چین میں اسے 1500 سے کھایا جا رہا ہے۔ حالانکہ چین کے اسے کھانے سے ملنے والے فائدوں کو لیکر کئے گئے دعوؤں کی کبھی ڈاکٹروں نے تصدیق نہیں ہے بلکہ ڈاکٹرس کا کہنا ہے کہ اسے کھانے کے نقصان بے شک ہیں۔ ڈاکٹروں کا ماننا ہے کہ اس میں وائرس ہو سکتے ہیں۔ دراصل ٹیکساس یونیورسٹی اسپتال (Texas University Hospital) کے ڈاکٹرس کا کہنا ہے کہ پلیسینتا ماں سے بچے تک تغذیہ فلٹر کر پہنچاتی ہے اس لئے اس میں خطرناک جراثیم اور وائرس چھپے ہو سکتے ہیں جسے کھانے سے سے بیماریاں ہو سکتی ہیں۔


گربھ نال کھانے والی والدہ کے بچے ہو سکتے ہیں بیمار
پلیسینٹا کھانے کے بارے میں 2016 میں سینتر فار ڈیزیز کنٹرو اینڈ پروینژن (Center for Disease Control and Prevention) نے ایک تحقیق کی تھی جس میں چونکانے والے ثبوت سامنے آئے تھے۔ یہ تحقیق ایک ایسی ماں پر کیا گیا تھا جس کے بچے کے خون میں خطرناک وائرس پہلے موجود تھے۔ آپ کو بتادیں کہ اس تحقیق میں سامنے آیا تھا کہ بچے کے ساتھ ایسا تب ہوا جب ماں بچے کے جنم کے بعد روزانہ پلیسینٹا سے بنا کیپسول کھا رہی تھی اس دوران وہ بچے کو دودھ پلاتی تھی اور اسی وجہ سے وائرس بچے تک پہنچ گیا۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jul 31, 2021 06:39 PM IST